بہترین زندگی کے راز, نفسیاتی مسائل کا حل , اپنی صحت بہتربنائیں, اسلام اورہم, ترقی کےراز, عملی زندگی کےمسائل اورحل, تاریخ سےسیکھیئے, سماجی وخاندانی مسائل, ازدواجی زندگی بہتربنائیں , گھریلومسائل, روزمرہ زندگی کےمسائل, گھریلوٹوٹکے اسلامی واقعات, کریئر, کونساپیشہ منتخب کریں, نوجوانوں کے مسائل , بچوں کی اچھی تربیت, بچوں کے مسائل , معلومات میں اضافہ , ہمارا پاکستان, سیاسی سمجھ بوجھ, کالم , طنز و مزاح, دلچسپ سائینسی معلومات, کاروبار کیسے کریں ملازمت میں ترقی کریں, غذا سے علاج, زندگی کےمسائل کا حل قرآن سے, بہترین اردو ادب, سیاحت و تفریح, ستاروں کی چال , خواتین کے لیے , مرد حضرات کے لیے, بچوں کی کہانیاں, آپ بیتی , فلمی دنیا, کھیل ہی کھیل , ہمارا معاشرہ اور اس کی اصلاح, سماجی معلومات, حیرت انگیز , مزاحیہ


دنیا میں تباہی مچانے والا بارود کب اور کیسے ایجاد ہوا؟

  بدھ‬‮ 10 اکتوبر‬‮ 2018  |  20:53

قصے کہانیوں میں بتایا جاتا ہے کہ سب سے پہلے چنگیز خان نے جنگ میں بارود سے کام لیا۔ یہ بات درست ہو یا نہ ہو، لیکن تاریخ ہمیں بتاتی ہے کہ چنگیز خان کے زمانے سے بہت پہلے یعنی نویں صدی میں اہل چین بارود بناتے اور اسے آتشیں پٹاخوں میں استعمال کرتے تھے۔یورپ میں بارود کی ایجاد کا سہرا تیرھویں صدی کے دو راہیوں

میں سے کسی ایک کے سر پر ہے۔ انگریز راجر بیکس یا جرمن برتھولڈ شوارٹز بارود ہی کے بل پر یورپی سپاہیوں نے روئے زمین پر حکمرانی کے جال بچھائے۔بارود کے

لیے تین چیزیں درکار تھیں: اول قلمی شورہ، دوسری گندھک، تیسری کوئلہ، بیکن نے شورے کو صاف کر کے قلمی شورہ بنانے کا طریقہ دریافت کیا اور بارود کا نسخہ تیار کیا۔ شوراٹرز نے اس سے کام لینے کے لیے آتش بار ہتھیار بنائے۔بہرحال بارود سازی کا بندوبست ہوگیا تو یورپ کی فوج تلوار، نیزے اور تیروں کی جگہ لڑائی میں گولیاں استعمال کرنے لگی۔بارود سرنگیں بنانے اور چٹانیں توڑنے میں بھی استعمال ہوتا ہے

دن کی زیادہ پڑھی گئیں پوسٹس‎