بہترین زندگی کے راز, نفسیاتی مسائل کا حل , اپنی صحت بہتربنائیں, اسلام اورہم, ترقی کےراز, عملی زندگی کےمسائل اورحل, تاریخ سےسیکھیئے, سماجی وخاندانی مسائل, ازدواجی زندگی بہتربنائیں , گھریلومسائل, روزمرہ زندگی کےمسائل, گھریلوٹوٹکے اسلامی واقعات, کریئر, کونساپیشہ منتخب کریں, نوجوانوں کے مسائل , بچوں کی اچھی تربیت, بچوں کے مسائل , معلومات میں اضافہ , ہمارا پاکستان, سیاسی سمجھ بوجھ, کالم , طنز و مزاح, دلچسپ سائینسی معلومات, کاروبار کیسے کریں ملازمت میں ترقی کریں, غذا سے علاج, زندگی کےمسائل کا حل قرآن سے, بہترین اردو ادب, سیاحت و تفریح, ستاروں کی چال , خواتین کے لیے , مرد حضرات کے لیے, بچوں کی کہانیاں, آپ بیتی , فلمی دنیا, کھیل ہی کھیل , ہمارا معاشرہ اور اس کی اصلاح, سماجی معلومات, حیرت انگیز , مزاحیہ


پاکستان دنیا کی کمزور ترین مارکیٹ میں کتنے نمبر پر آگیا،ڈالر کی قیمت 140 کے بجائے کہاں تک پہنچ سکتی ہے؟ماہرین نے بڑے خطرے سے آگاہ کردیا

  جمعرات‬‮ 11 اکتوبر‬‮ 2018  |  19:12

کراچی(این این آئی)روپے کی قدر میں حالیہ بے قدری کے بعد پاکستان دنیا کی تیسری کمزور ترین مارکیٹ بن گیا ہے۔ معاشی ماہرین کے مطابق پاکستان نے کرنسی کی بے قدری میں اپنے خطے کے دیگر ممالک کو پیچھے چھوڑ دیا ہے، جس کے بعد جنوبی ایشیا میں پاکستانی روپیہ سستی ترین کرنسی بن گیا ہے۔سال 1995 کے بعد پہلی بار پاکستانی کرنسی کم ترین سطح پر پہنچی ہے جب کہ ماہرین نے

آئندہ چند روز کے دوران روپے کی قدر میں مزید کمی کا خدشہ بھی ظاہر کر رکھا ہے۔دو ماہ قبل کرنسی مارکیٹ میں پاکستانی

روپے کی قدر میں بہتری آئی تھی اور امریکی ڈالر سستا ہوا تھا لیکن اس کے بعد سے مسلسل روپے کی قدر میں کمی واقع ہو رہی ہے۔رپورٹ کے مطابق بین الاقوامی مالیاتی فنڈ(آئی ایم ایف)کے مطابق سال 2018 میں پاکستان کا کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ 5.9 فیصد تک رہنے کا امکان ہے۔ پاکستان کے کرنٹ اکاؤنٹ خسارے میں سال 2019 تک 0.6 فیصد تک کمی واقع ہو سکتی ہے۔

رپورٹ کے مطابق مالی سال 19-2018 کا بجٹ خسارہ 6.5 جب کہ 20-2019 میں یہ خسارہ 6.9فیصد تک پہنچ جائے گا۔گزشتہ دنوں عالمی مالیاتی فنڈ کے وفد نے سالانہ جائزہ کے لیے پاکستان کا دورہ کیا تھا۔ اس موقع پر آئی ایم ایف کی جانب سے ٹیکس بڑھانے، رعایتی قیمتیں ختم کرنے، بنیادی سہولتوں کی قیمتوں میں اضافے کے ساتھ روپے کی قدر مزید گرانے کی مطالبہ نما تجاویز دی تھیں۔پاکستانی حکام کی جانب سے ابتدا میں ان تجاویز کو نہ ماننے کا عندیہ دیا گیا تاہم دو روز قبل انٹربینک مارکیٹ میں ڈالر کی قیمت میں نو روپے سے زائد اضافہ ہوا تھا۔اقتصادی ماہرین نے حکومتی رجحان کو مدنظر رکھتے ہوئے خدشہ ظاہر کیا ہے کہ روپیہ اب بھی اوور ویلیو ہے اور قدر مزید کھو کر فی ڈالر 145 روپے تک جا سکتا ہے۔

دن کی زیادہ پڑھی گئیں پوسٹس‎