بہترین زندگی کے راز, اسپیشل نفسیاتی مسائل کا حل , اپنی صحت بہتربنائیں, اسلام اورہم, ترقی کےراز, عملی زندگی کےمسائل اورحل, تاریخ سےسیکھیئے, سماجی وخاندانی مسائل, ازدواجی زندگی بہتربنائیں , گھریلومسائل, روزمرہ زندگی کےمسائل, گھریلوٹوٹکے اسلامی واقعات, کریئر, کونساپیشہ منتخب کریں, نوجوانوں کے مسائل , بچوں کی اچھی تربیت, بچوں کے مسائل , معلومات میں اضافہ , ہمارا پاکستان, سیاسی سمجھ بوجھ, کالم , طنز و مزاح, دلچسپ سائینسی معلومات, کاروبار کیسے کریں ملازمت میں ترقی کریں, غذا سے علاج, زندگی کےمسائل کا حل قرآن سے, بہترین اردو ادب, سیاحت و تفریح, ستاروں کی چال , خواتین کے لیے , مرد حضرات کے لیے, بچوں کی کہانیاں, آپ بیتی , فلمی دنیا, کھیل ہی کھیل , ہمارا معاشرہ اور اس کی اصلاح, سماجی معلومات, حیرت انگیز , مزاحیہ


بڑے ملک نے ڈالر کا بائیکا ٹ کردیا

  جمعرات‬‮ 18 اکتوبر‬‮ 2018  |  18:41

 دنیا پر امریکی اثرو رسوخ کا اصل راز اس ملک کی کرنسی یعنی ڈالر کی عالمی تجارت پر حکمرانی میں پنہاں ہے، لیکن لگتا ہے کہ اب ڈالر کے زوال کا وقت آن پہنچا ہے۔ کچھ ممالک تو اپنی طاقت کے بل پر ڈالر کی قید سے آزاد ہو رہے ہیں اور کچھ امریکا کی لگائی پابندیوں کے باعث ڈالر کو خیرباد کہنے پر مجبور ہو رہے ہیں۔ لاطینی

امریکا کے ملک وینز ویلا کا شمار دوسری قسم کے ممالک میں ہوتا ہے، جس نے امریکی کرنسی ڈالر کا استعمال ترک کرتے ہوئے مستقبل میں ایکسچینج مارکیٹ

کے تمام سودے یورو میں کرنے کا اعلان کردیا ہے۔ یہ اعلان ملک کے نائب صدر طارق الاعصامی کی جانب سے کیا گیا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ امریکہ کی جانب سے وینز ویلا پر عائد کی جانے والی پابندیوں نے ڈالر میں تجارت جاری رکھنا ناممکن بنادیا تھا

 جس کے بعد یہ فیصلہ کرنا پڑا۔ نائب صدر کا یہ بھی کہنا تھا کہ امریکہ کی جانب سے عائد کی گئی پابندیاں غیر قانونی اور بین الاقوامی قانون کے خلاف ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ ’’امریکہ کی پابندیوں نے ملک میں پبلک اور پرائیویٹ دونوں شعبوں کو متاثر کیا ہے، یہاں تک کہ ادویات اور زراعت کے شعبے بھی بری طرح متاثر ہوئے ہیں، جس سے اندازہ کیا جاسکتا ہے کہ استعمار اپنے جنون میں کس حد تک جاسکتا ہے۔‘‘

  عالمی تجارت کے لئے کرنسی کی تبدیلی کے فیصلے کے بعد وینز ویلا کا فلوٹنگ ایکسچینج سسٹم یورو، یوان اور اِن کے ساتھ قابل تبادلہ دیگر کرنسیوں کو استعمال کرے گا اور فارن ایکسچینج مارکیٹ کو کسی بھی دیگر قابل تبادلہ کرنسی کے استعمال کی اجازت ہوگی۔ حکومتی اعلان کے مطابق تمام پرائیویٹ بینکیں بھی اس فیصلے پر عملدرآمد کریں گے۔ نومبر اور دسمبر میں حکومت کی جانب سے دو ارب یورو فروخت کئے جائیں گے تاکہ عوام حقیقی شرح پر یورو حاصل کر سکیں

loading...

دن کی زیادہ پڑھی گئیں پوسٹس‎