Android AppiOS App

بہترین زندگی کے راز, اسپیشل نفسیاتی مسائل کا حل , اپنی صحت بہتربنائیں, اسلام اورہم, ترقی کےراز, عملی زندگی کےمسائل اورحل, تاریخ سےسیکھیئے, سماجی وخاندانی مسائل, ازدواجی زندگی بہتربنائیں , گھریلومسائل, روزمرہ زندگی کےمسائل, گھریلوٹوٹکے اسلامی واقعات, کریئر, کونساپیشہ منتخب کریں, نوجوانوں کے مسائل , بچوں کی اچھی تربیت, بچوں کے مسائل , معلومات میں اضافہ , ہمارا پاکستان, سیاسی سمجھ بوجھ, کالم , طنز و مزاح, دلچسپ سائینسی معلومات, کاروبار کیسے کریں ملازمت میں ترقی کریں, غذا سے علاج, زندگی کےمسائل کا حل قرآن سے, بہترین اردو ادب, سیاحت و تفریح, ستاروں کی چال , خواتین کے لیے , مرد حضرات کے لیے, بچوں کی کہانیاں, آپ بیتی , فلمی دنیا, کھیل ہی کھیل , ہمارا معاشرہ اور اس کی اصلاح, سماجی معلومات, حیرت انگیز , مزاحیہ


چلنا سیکھنے والے بچوں کی حفاظت یقینی بنانے کے لیے ضروری ٹپس

  پیر‬‮ 3 دسمبر‬‮ 2018  |  8:37

اکثر والدین اس بات پر توجہ نہیں دیتے کہ چلنے کی عمر کو پہنچ چکے بچے کس قدر آسانی سے خود کو خطرے میں ڈال سکتے اگر آپ کے بچے نے حال ہی میں چلنا شروع کیا ہے تو آپ کو اندازہ ہوگیا ہوگا کہ آپ کے گھر میں بظاہر محفوظ نظر آنے والی ایسی بیسیوں اشیا موجود ہیں جو آپ کے بچے کو جسمانی نقصان پہنچا سکتی ہیں۔

چنانچہ ایسی صورتحال پیدا ہونے سے بچانے کے لیے آپ کو مندرجہ ذیل اقدامات کرنے چاہیئں۔گھر کے اندر موجود تالابوں/ٹنکیوں کے گرد جالی یا دیوار بنوا دیں۔کھڑکیاں، بالخصوص بلندی پر

واقع کھڑکیوں کے آگے جالیاں لگوا دیں۔کوئی بھی فرنیچر یا آلات جو نیچے گر سکتے ہوں، انہیں حفاظتی پٹیوں کے ساتھ بندھوا دیں یا دیوار میں بریکٹس کے ذریعے مضبوطی سے فکس کروا دیں۔فرنیچر کے سخت اور نوکیلے حصوں کو گدے سے ڈھک دیں۔غیر محفوظ جگہوں مثلاً سیڑھیوں، ریڈی ایٹر یا فلور ہیٹر سے دُور رکھیں۔

اس کے لیے آپ حفاظتی دروازے استعمال کرسکتے ہیں۔ یا چھت وغیرہ کی ریلنگ میں موجود خلا کو جالیوں سے پُر کردیں۔باتھ ٹب کے نلکے کو ہمیشہ ڈھکا رکھیں اور ٹب کے فرش کو نان سلپ میٹ سے ڈھک دیں۔چولہوں کی نابز پر حفاظتی کور لگا دیں۔فریج اور اوون کے دروازوں، درازوں، کیبنٹس اور ٹوائلٹ سیٹ کو حفاظتی پٹی سے بند کرکے رکھیں۔

بجلی کے سوئچ اور تاروں والی جگہوں تک رسائی مشکل رکھیں۔ برقی آلات کو استعمال میں نہ ہونے پر ہمیشہ پلگ نکال کر اور بچوں کی پہنچ سے دُور رکھیں۔کوئی بھی ایسی چھوٹی شے جو بچوں کے منہ میں جاسکتی ہے (عمومی طور پر سوا 1 انچ چوڑی یا سوا 2 انچ لمبی چیز ان کے منہ میں سما سکتی ہے) کو یا تو گھر سے نکال دیں اور اگر ایسا ممکن نہیں تو بچوں کی پہنچ سے دُور رکھیں۔چھریاں، ٹوٹنے والی چیزیں، دوائیں، زہریلے کیمیکل، ماچس اور تمام دیگر خطرناک چیزوں تک بچوں کی رسائی ناممکن بنا دیں۔

کچرے کو ایسے کیبنٹ یا الماری میں بند کردیں جسے حفاظتی پٹی سے لاک کیا جاسکتا ہو۔میزوں کی چادریں ہٹا دیں۔پردوں یا بلائنڈز کی غیر ضروری طویل ڈوریوں کو ہٹا دیں۔شیشے کے دروازوں پر ایسے اسٹیکر لگا دیں جس سے دروازہ بند ہونے کا اندازہ ہوسکے