بہترین زندگی کے راز, نفسیاتی مسائل کا حل , اپنی صحت بہتربنائیں, اسلام اورہم, ترقی کےراز, عملی زندگی کےمسائل اورحل, تاریخ سےسیکھیئے, سماجی وخاندانی مسائل, ازدواجی زندگی بہتربنائیں , گھریلومسائل, روزمرہ زندگی کےمسائل, گھریلوٹوٹکے اسلامی واقعات, کریئر, کونساپیشہ منتخب کریں, نوجوانوں کے مسائل , بچوں کی اچھی تربیت, بچوں کے مسائل , معلومات میں اضافہ , ہمارا پاکستان, سیاسی سمجھ بوجھ, کالم , طنز و مزاح, دلچسپ سائینسی معلومات, کاروبار کیسے کریں ملازمت میں ترقی کریں, غذا سے علاج, زندگی کےمسائل کا حل قرآن سے, بہترین اردو ادب, سیاحت و تفریح, ستاروں کی چال , خواتین کے لیے , مرد حضرات کے لیے, بچوں کی کہانیاں, آپ بیتی , فلمی دنیا, کھیل ہی کھیل , ہمارا معاشرہ اور اس کی اصلاح, سماجی معلومات, حیرت انگیز , مزاحیہ


ہر سال ’’سموگ‘‘ کی وجہ سے پریشانی کا سامنا کرنا پڑتا تھا لیکن اس سال سموگ کیسے کنٹرول ہو گئی؟ وزیر ماحولیاتی تبدیلی زرتاج گل نے انتہائی کم عرصے میں ناممکن کو ممکن کیسے بنایا؟ حیرت انگیز انکشافات

  ہفتہ‬‮ 15 دسمبر‬‮ 2018  |  11:49

وزیرمملکت موسمیاتی تبدیلی زرتاج گل نے ایک پریس کانفرنس کے دوران کہا کہ ہماری وزارت کا سب سے خوبصورت پراجیکٹ دس بلین پودے لگانا ہے، یہ وزیراعظم عمران خان کا خواب اور وژن ہے کہ وہ آنے والی نسلوں کو ایک سرسبز اور ماحولیاتی آلودگی سے پاک پاکستان دینا چاہتے ہیں، تحریک انصاف کی گزشتہ حکومت کی جانب سے خیبرپختونخوا میں درخت لگانے کا یہ منصوبہ بہت شاندار رہا، اس پر اب پورے ملک میں تمام صوبوں کے ساتھ مل کر کام کیا جائے گا،

اس سلسلے میں ہم نے تمام صوبوں سے پی سی ون منگوانے

شروع کر دیے ہیں اور اس پر اچھی پیش رفت بھی ہو رہی ہے، انہوں نے کہاکہ جب تمام صوبے پی سی ون دے دیں گے تو انشاء اللہ یہ دس بلین ٹری کا منصوبہ رپلیکیٹ ہو گا، زرتاج گل نے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ پورے دنیا میں موسمیاتی تبدیلی کے بارے میں جو چل رہا ہے، اس میں پاکستان پہلے دس ملکوں میں شامل ہے، جہاں موسمیاتی تبدیلی وقوع پذیر ہو رہی ہے، انہوں نے بتایا کہ کفایت شعاری مہم کے تحت ہماری وزارت نے پہلے تین مہینوں میں تین کروڑ روپے کی بچت کی ہے اور آنے والے دنوں میں مزید کریں گے، زرتاج گل نے کہا کہ ہماری وزارت کی ایک اور کامیابی سموگ پر کنٹرول کرنا ہے، انہوں نے بتایا کہ پاکستان کے لوگوں کو میڈیا کے ذریعے بتانا چاہتی ہوں کہ

پچھلے تین سالوں سے آپ نے ایک بات نوٹ کی ہوگی کہ پچیس سے ستائیس دن تک خصوصاً پنجاب میں لاہور، ساہیوال، اوکاڑہ اور خانیوال میں سموگ آ جاتی تھی، اس سے ہماری اکانومی کو نقصان پہنچ رہا تھا، کیونکہ گاڑیاں رک جاتی تھیں اور فلائٹس بھی متاثر ہوتی تھیں، اس سے جلد کی بیماریاں بھی ہو رہی تھیں، پہلی دفعہ ہماری وزارت نے اس پر قدم اٹھایا اور سموگ کنٹرول پر توجہ دی، انہوں نے بھٹہ مالکان کا شکریہ بھی ادا کیا اور کہا کہ بھٹہ مالکان نے ہم سے تعاون کیا اور ایک ماہ تک بھٹوں کو بند رکھا، انہوں نے بتایا کہ بھٹہ مالکان کے پاس اتنے فنڈز نہیں ہوتے اس لیے اب ہم ان کی ٹریننگ کروائیں گے اور ایک زگ زیگ طریقہ کار متعارف کروا رہے ہیں جس سے گرین چمنی سے سفید دھواں نکلے گا اور اینٹیں بھی مضبوط اور پائیدار ہوں گی۔

دن کی زیادہ پڑھی گئیں پوسٹس‎