بہترین زندگی کے راز, نفسیاتی مسائل کا حل , اپنی صحت بہتربنائیں, اسلام اورہم, ترقی کےراز, عملی زندگی کےمسائل اورحل, تاریخ سےسیکھیئے, سماجی وخاندانی مسائل, ازدواجی زندگی بہتربنائیں , گھریلومسائل, روزمرہ زندگی کےمسائل, گھریلوٹوٹکے اسلامی واقعات, کریئر, کونساپیشہ منتخب کریں, نوجوانوں کے مسائل , بچوں کی اچھی تربیت, بچوں کے مسائل , معلومات میں اضافہ , ہمارا پاکستان, سیاسی سمجھ بوجھ, کالم , طنز و مزاح, دلچسپ سائینسی معلومات, کاروبار کیسے کریں ملازمت میں ترقی کریں, غذا سے علاج, زندگی کےمسائل کا حل قرآن سے, بہترین اردو ادب, سیاحت و تفریح, ستاروں کی چال , خواتین کے لیے , مرد حضرات کے لیے, بچوں کی کہانیاں, آپ بیتی , فلمی دنیا, کھیل ہی کھیل , ہمارا معاشرہ اور اس کی اصلاح, سماجی معلومات, حیرت انگیز , مزاحیہ


غیر ملکی شہریت رکھنے والا پاکستانی پارلیمان کا رکن بننے کا اہل نہیں ہے یا نہیں؟سپریم کورٹ نے دہری شہریت سے متعلق تفصیلی فیصلہ جاری کر دیا

  جمعرات‬‮ 10 جنوری‬‮ 2019  |  21:05

سپریم کورٹ نے اراکین پارلیمنٹ کی دہری شہریت سے متعلق کیس کا تفصیلی فیصلہ جاری کر دیا ہے جس میں کہاگیا ہے کہ غیر ملکی شہریت رکھنے والا پاکستانی پارلیمان کا رکن بننے کا اہل نہیں، پارلیمنٹ کی رکنیت کیلئے غیر ملکی شہریت کو ترک کرنے کے قانونی تقاضے پورے کرنا لازم ہے، صرف دہری شہریت ترک کرنے کے عمل کو شروع کرنے سے نااہلی ختم نہیں ہو سکتی۔

جمعرات کو سات جج صاحبان کا 32 صفحات پر مشتمل فیصلہ جسٹس شیخ عظمت سعید نے تحریر کیا۔فیصلے میں کہا گیا کہ غیر ملکی شہریت رکھنے والا پاکستانی

پارلیمان کا رکن بننے کا اہل نہیں، پارلیمنٹ کی رکنیت کے لیے غیر ملکی شہریت کو ترک کرنے کے قانونی تقاضے پورے کرنا لازم ہے، صرف دہری شہریت ترک کرنے کے عمل کو شروع کرنے سے نااہلی ختم نہیں ہو سکتی۔سپریم کورٹ کے تفصیلی فیصلہ میں کہا گیا کہ سینیٹر چودھری محمد سرور نے برطانوی شہریت ترک کرنے کے دستاویزات پیش کئے،

ان کی شہریت ترک کرنے دستاویزات کی تصدیق کی ضرورت ہے، اس کے علاوہ سینیٹر نزہت صادق کی امریکی شہریت کو ترک کرنے کی دستاویزات بھی تصدیق کا تقاضا کرتی ہیں۔فیصلے میں کہا گیا کہ سینیٹر ہارون اختر خان نے 1980ء میں کینیڈین شہریت لی، انہوں نے مانا کہ ان کی شہریت ترک کرنے کا عمل مکمل نہیں ہوا، وہ سینیٹر بننے کے اہل نہیں۔اس کے علاوہ فیصلے میں کہا گیا کہ سعدیہ عباسی نے جب سینیٹرشپ کے لئے کاغذات نامزدگی جمع کرائے اس وقت وہ دہری شہریت یافتہ تھیں، کاغذات نامزدگی جمع کرواتے وقت سعدیہ عباسی کی امریکی شہریت کو ترک کرنے کا عمل مکمل نہیں ہوا تھا، سعدیہ عباسی سینیٹر بننے کی اہلیت نہیں رکھتی تھیں۔

دن کی زیادہ پڑھی گئیں پوسٹس‎