Android AppiOS App

بہترین زندگی کے راز, اسپیشل نفسیاتی مسائل کا حل , اپنی صحت بہتربنائیں, اسلام اورہم, ترقی کےراز, عملی زندگی کےمسائل اورحل, تاریخ سےسیکھیئے, سماجی وخاندانی مسائل, ازدواجی زندگی بہتربنائیں , گھریلومسائل, روزمرہ زندگی کےمسائل, گھریلوٹوٹکے اسلامی واقعات, کریئر, کونساپیشہ منتخب کریں, نوجوانوں کے مسائل , بچوں کی اچھی تربیت, بچوں کے مسائل , معلومات میں اضافہ , ہمارا پاکستان, سیاسی سمجھ بوجھ, کالم , طنز و مزاح, دلچسپ سائینسی معلومات, کاروبار کیسے کریں ملازمت میں ترقی کریں, غذا سے علاج, زندگی کےمسائل کا حل قرآن سے, بہترین اردو ادب, سیاحت و تفریح, ستاروں کی چال , خواتین کے لیے , مرد حضرات کے لیے, بچوں کی کہانیاں, آپ بیتی , فلمی دنیا, کھیل ہی کھیل , ہمارا معاشرہ اور اس کی اصلاح, سماجی معلومات, حیرت انگیز , مزاحیہ


کیا آپ کی توبہ رب تعالیٰ کے ہاں قبول ہوگئی؟ جانئے وہ نشانیاں جن کے ذریعے آپ کوتوبہ کی قبولیت کا پیغام دیدیا جاتا ہے

  ہفتہ‬‮ 12 جنوری‬‮ 2019  |  20:12

انسان خطا کا پتلا ہے اور اس سے غلطیاں سرزد ہو جانا ایک عام بات ہے کیونکہ رب تعالیٰ کے علاوہ کوئی مکمل نہیں اور اس کے بھیجے گئے نبی اور پیغمبر گناہوں سے معصوم ہیں۔ غلطیوں اور گناہوں پر ندامت دراصل ایمان کی نشانی ہے۔ حدیث شریف کا مفہوم ہے کہ جب تمہارے اچھے اعمال سے تمہیں مسرت محسوس ہونے لگے اور برے اعمال سےتکلیف اور غم محسوس ہو تو یہ ایمان کی نشانی ہے۔ندامت کے بعد توبہ کا عمل ہے اوراس حوالے سے بعض لوگ نہایت تذبذب کا شکار رہتے ہیں

کہ پتہ نہیں کہ

ان کی توبہ اللہ تعالیٰ نے قبول کی بھی ہے کہ نہیں تو چند ایسی نشانیاں ہم یہاں آپ سے بیان کرنے جا رہے ہیں کہ جس سے آپ کو آپ کی اللہ تعالیٰ کے حضور پیش کی گئی توبہ کی قبولیت سے متعلق ذہنی سکون اور راحت کا احساس ہو گا بلکہ آپ رب کائنات کی بے پایاں رحمت کو بھی بخوبی محسوس کر سکیں گے۔ توبہ دراصل اپنے گناہوں پر گہرا دکھ اور ندامت محسوس کرنے کا ہی دوسرا نام ہے۔ جب انسان اپنے طرزعمل کو بدلنے کے لئے بے قرار ہوجاتا ہے تو یہ اس بات کی نشانی ہے کہ پروردگار نے اس پر کرم کردیاہے اور اسے ہدایت کا راستہ دکھادیا ہے۔علماءکہتے ہیں کہ

 دل کی اس بے قراری کا خاتمہ صرف اللہ تعالیٰ کی رضا و خوشنودی کے حصول سے ممکن ہے۔ اگر احساس ندامت اور توبہ کے بعد آپ کے دل کو قرار نصیب ہوجاتا ہے تو علما کے نزدیک یہ اس بات کی علامت ہے کہ پروردگار نے آپ کی توبہ قبول فرمائی ہے اور آپ کے دل کو اطمینان بخش دیا ہے۔دین اسلام بھی تمام مسلمانوں کو اپنی غلطیوں ، کوتاہیوں اور گناہوں پر نادم ہونے اور توبہ کی تلقین کرتا ہے کیونکہ اسلام کا سبق ہے کہ کائنات کا رب انسان سے 70مائوں سے زیادہ پیار کرتا ہے پھر وہ کیسے اس کی سچے دل سے کی گئی توبہ کو قبول نہیں فرمائے گا۔اللہ کی رحمت سے مایوس لوگ ہی ندامت سے پرہیز اور توبہ سے دور بھاگنے کی کوشش کرتے ہیں جو کہ رب تعالیٰ پر ان کے کمزور ایمان اور عقیدے کی نشانی ہو تی ہے اور اللہ تعالیٰ مستقل اور مسلسل نافرمانیوں پر سخت ناراض ہوتے ہیں اور یہ توبہ ہی ہے جو مسلسل نافرمانیوں کے بعد رب تعالیٰ کے غضب سے نجات کا باعث بنتی ہے۔

گناہوں پر شرمندگی اور ندامت کا احساس نہ ہونا دراصل رب کےغصے اور غضب کی علامت ہے۔ ترجمہ: اللہ نے رحمت کے سو حصے بنائے اور اپنے پاس ان مےںسے ننانوے حصے رکھے صرف ایک حصہ زمین پر اتارا اور اسی کی وجہ سے تم دیکھتے ہو کہ مخلوق ایک دوسرے پر رحم کرتی ہے ، یہاں تک کہ گھوڑی بھی اپنے بچہ کو اپنے سم نہیں لگنے دیتی بلکہ سموں کواٹھا لیتی ہے کہ کہیں اس سے اس بچہ کو تکلیف نہ پہنچے ۔

دن کی زیادہ پڑھی گئیں پوسٹس‎