Android AppiOS App

بہترین زندگی کے راز, اسپیشل نفسیاتی مسائل کا حل , اپنی صحت بہتربنائیں, اسلام اورہم, ترقی کےراز, عملی زندگی کےمسائل اورحل, تاریخ سےسیکھیئے, سماجی وخاندانی مسائل, ازدواجی زندگی بہتربنائیں , گھریلومسائل, روزمرہ زندگی کےمسائل, گھریلوٹوٹکے اسلامی واقعات, کریئر, کونساپیشہ منتخب کریں, نوجوانوں کے مسائل , بچوں کی اچھی تربیت, بچوں کے مسائل , معلومات میں اضافہ , ہمارا پاکستان, سیاسی سمجھ بوجھ, کالم , طنز و مزاح, دلچسپ سائینسی معلومات, کاروبار کیسے کریں ملازمت میں ترقی کریں, غذا سے علاج, زندگی کےمسائل کا حل قرآن سے, بہترین اردو ادب, سیاحت و تفریح, ستاروں کی چال , خواتین کے لیے , مرد حضرات کے لیے, بچوں کی کہانیاں, آپ بیتی , فلمی دنیا, کھیل ہی کھیل , ہمارا معاشرہ اور اس کی اصلاح, سماجی معلومات, حیرت انگیز , مزاحیہ


چین کی کیا چیز روک دیں گے امریکا نے انتباہ جاری کر دیا

  بدھ‬‮ 13 مارچ‬‮ 2019  |  20:23

امریکا اور یورپی اقوام کے مابین تعلقات میں حالیہ کچھ عرصے میں اتار چڑھاؤ دیکھا گیا ہے۔ اب ایک نئی پیش رفت وہ امریکی انتباہ ہے، جو جرمن حکومت کو چین کے بارے میں معلومات کی فراہمی کو روکنے کے حوالے سے کیا گیا ہے۔امریکا نے اپنے اہم اتحادی ملکجرمنی کو متنبہ کیا ہے کہ

واشنگٹن حکومت چین سے متعلق حساس معلومات کی فراہمی کو محدود کر سکتی ہے اگر اِس یورپی اتحادی ملک نے تیز رفتار انٹرنیٹ ورک نظام کی تنصیب کے لیے چینی کمپنیوں کا سہارا یا معاونت حاصل کی۔میڈیارپورٹس کے مطابق یہ بیان جرمن

دارالحکومت سے امریکی سفارت خانے کے بیان میں کہاگیا۔ امریکی سفارت خانے کے ترجمان نے کہا کہ جرمنی میں ٹیلی کام کے شعبے میں پیشہ ورانہ خدمات مہیا کرنے والے ناقابل اعتماد اداروں کی کوئی جگہ نہیں ہے۔ امریکی سفارت خانے کے ترجمان کے مطابق اگر ایسا ہوتا ہے تو

حساس معلومات کے تبادلے پر سوالات کھڑے ہو جائیں گے۔امریکی سفارت خانے کی جانب سے یہ بیان معتبر امریکی اخبار میں شائع ہونے والی رپورٹ کے تناظر میں سامنے آیا ، اس رپورٹ میں واضح کیا گیا کہ چینی ٹیلی کام کمپنی ہواوے جرمنی میں فائیو جی انٹرنیٹ نظام کی تنصیب میں شامل کی جا رہی ہے۔اس حوالے سے امریکی سفیر رچرڈ گرینل نے ایک خط جرمن وزیر اقتصادیات کو تحریر کیا۔ اس خط میں سفیر نے لکھا کہ حساس معلومات کے دو طرفہ تبادلے کا موجودہ سلسلہ اْسی صورت میں جاری رہ سکتا ہے اگر جرمن حکومت نیٹ ورک نظام کی تنصیب سے چینی کمپنیوں کو باہر کرتی ہے۔یہ امر اہم ہے کہ جرمنی میں موبائل ٹیلی فونز کے لیے فائیو جی فریکوئنسیوں کا اجراء سال رواں کی دوسری ششماہی میں ہو گا۔

دن کی زیادہ پڑھی گئیں پوسٹس‎