Android AppiOS App

بہترین زندگی کے راز, اسپیشل نفسیاتی مسائل کا حل , اپنی صحت بہتربنائیں, اسلام اورہم, ترقی کےراز, عملی زندگی کےمسائل اورحل, تاریخ سےسیکھیئے, سماجی وخاندانی مسائل, ازدواجی زندگی بہتربنائیں , گھریلومسائل, روزمرہ زندگی کےمسائل, گھریلوٹوٹکے اسلامی واقعات, کریئر, کونساپیشہ منتخب کریں, نوجوانوں کے مسائل , بچوں کی اچھی تربیت, بچوں کے مسائل , معلومات میں اضافہ , ہمارا پاکستان, سیاسی سمجھ بوجھ, کالم , طنز و مزاح, دلچسپ سائینسی معلومات, کاروبار کیسے کریں ملازمت میں ترقی کریں, غذا سے علاج, زندگی کےمسائل کا حل قرآن سے, بہترین اردو ادب, سیاحت و تفریح, ستاروں کی چال , خواتین کے لیے , مرد حضرات کے لیے, بچوں کی کہانیاں, آپ بیتی , فلمی دنیا, کھیل ہی کھیل , ہمارا معاشرہ اور اس کی اصلاح, سماجی معلومات, حیرت انگیز , مزاحیہ


دنیا کے 10 مشہور برانڈز جن کے معنی آپ کو حیران کردیں گے

  جمعرات‬‮ 14 مارچ‬‮ 2019  |  12:33

عالمی منڈیوں میں سیکڑوں ٹریڈ مارک ہیں جن کے ساتھ ہمارا روز مرہ کی زندگی میں واسطہ پڑتا رہتا ہے۔ ان میں سے بعض تو نہایت پرانے اور زبانوں پر کثرت سے ہونے کے باعث عالمی ثقافتی ورثے کی صورت اختیار کر گئے ہیں۔یہاں تک کہ ہم کو کبھی خیال بھی نہیں آتا کہ آیا اس برانڈ کے نام کا مطلب کیا ہے یا اس کے نام کی اصل کیا ہے۔ البتہ ٹریڈ مارک کی طاقت کے باوجود ان میں بعض کے ناموں کا قصہ عجیب اور متجسّس نوعیت کا ہے۔Pepsi: کا نام ‘بُرے ہاضمے’ سےمشہور مشروب پیپسی

کا مخترع Caleb Davis Bradham درحقیقت ڈاکٹر بننا چاہتا تھا تاہم

گھریلو حالات نے اسے اپنے خواب سے دست بردار ہونے پر مجبور کر دیا۔ ابتدا میں اس نے اپنے مشروب کوBrad کے نام سے متعارف کرایا۔ تین برس بعد وہ اس بات پر قائل ہو گیا کہ یہ مشروب ہاضمے میں مدد دیتا ہے لہذا اس نے مشروب کا نام بدل کرPepsi-Cola رکھ دیا جو سائنسی نامDyspepsia سے لیا گیا۔Google: ایک تحریری غلطی !معروف کمپنیGoogle کا نام Stanford یونی ورسٹی میں سامنے آیا جبLarry Page ویب سائٹ کے بانی کے دل میں ایک بڑی معلوماتی ویب سائٹ بنانے کا خیال آیا۔ اس سلسلے میں مجوزہ نام”googolplex” تھا جو ایک طالب علم کی جانب سے تحریری غلطی کے سبب Google تحریر ہو گیا اور ویب سائٹ کا بانی اسی نام کو اختیار کرنے پر مجبور ہو گیا۔ اب یہ دنیا کا سب سے بڑا سرچ انجن ہے۔Zara: نام کی تکرار سے بچنے کا نتیجہمشہور برانڈ Zara کا مالکAmancio Ortega انیس سو ساٹھ کی دہائی میں بننے والی ایک فلم Zorba the Greek سے بڑا متاثر تھا لہذا اس نے 1975 میں La Coruña ہسپانیہ میں تیار کپڑوں کی فروخت کے لیے اپنی پہلی دکان کا نام Zorba رکھا۔ بعد ازاں اسے معلوم ہوا کہ قریبی ایک دوسری دکان پہلے سے اس نام کے ساتھ موجود ہے جب کہ برانڈ کے نام کے لیے حروف تیار ہو چکے تھے لہذا

 اس نے ان حروف کی ترتیب بدل کر نیا نام Zara کر دیا۔IKEA: کوئی سویڈش لفظ نہیں!معروف کمپنی Ingvar Kamprad کے مالک نے نام کے لیے مختصر ترین طریقہ اپنا اور آسانی سے اپنے نام کے ابتدائی دو حرفوں کو جوڑ کر IK بنا دیا۔ اس میں مزید دو حروف کا اضافہ بھی کیا جو سویڈن کے جنوب میں اس قصبے اور فارم کے ناموں کے ابتدائی حروف تھے جہاں اس نے پرورش پائی۔ فارم کا نامElmtaryd اور قصبے کا نام Agunnaryd تھا۔Gap: خلاءعروف برانڈGap کی پہلی دکان کا افتتاح 1969 میں ہوا۔ اس دکان کا بنیادی مقصد نئی قسم کی “جینز” کی پینٹ فروخت کرنا تھا۔ اس کے نام میں اس “خلاء” یا فاصلے کی جانب اشارہ کیا گیا جو بچپن اور ہوش سنبھالنے کی عمر کے درمیان پایا جاتا ہے۔Amazon: عظیم دریامعروف ٹریڈ

مارکAmazon کے بانی Bezos کے سامنے 1995 میں برانڈ کو متعارف کرانے کے وقت نام کے حوالے سے کئی خیالات تھے۔ وہ Cadabra نام منتخب کرنے کا خواہش مند تھا تاہم اس کے ایک ساتھی نے قائل کیا کہ مذکورہ نام لفظCadaver (لاش) سے ملتا جلتا ہے لہذا اس کو بہتر متبادل تلاش کرنا چاہیے۔ بالآخر آن لائن خریداری کی مشہور کمپنی کے نام کے طور پرAmazon کا انتخاب کیا گیا جو دنیا میں سب سے بڑے دریا کا نام ہے۔Häagen-Dazs: بنا معنی !آئس کریم کی دنیا میں مشہور برانڈ Häagen-Dazs کے مالک Reuben Mattus نے اپنی کمپنی کا نام بنا کسی معنی کے رکھ دیا۔ اس حوالے سے صرف اتنا کہا جا سکتا ہے کہ یہ ڈینش زبان کا لفظ ہے! دراصلMattus یہودی جڑیں رکھنے والا ایک پولش مہاجر تھا۔ وہ دوسری جنگ عظیم کے دوران یہودیوں کی سپورٹ کرنے پر ڈنمارک کو بہت زیادہ پسند کرتا تھا۔Rolex: اس کے بانی کے لیے سننے میں آسان ترینقیمتی ترین گھڑیوں کے معروف ترین برانڈ Rolex کا مالک Hans Wilsdorf درحقیقت ایسا سادہ سا نام چاہتا تھا جو ہر زبان میں آسانی سے بولا جا سکے۔

اس حوالے سے اس نے سیکڑوں ممکنہ ناموں کی فہرست تیار کر لی تاہم ان میں سے کوئی بھی دنیا کی مشہور ترین گھڑی کے نام کے طور پر اس کے دل کو نہیں لگا۔ آخر کار ایک روز وہ لندن شہر میں گھوم رہا تھا کہ اچانک اس کے دل میں Rolex کا نام آ گیا !Adidas: فٹ بال کا خواب نہیں !بہت سے لوگ یہ سمجھتے ہیں کہ Adidas کا لفظ درج ذیل انگریزی عبارت کا اختصار ہے… “All Day I Dream About Soccer” … تاہم اس نام کی اصل یہ ہے کہ کمپنی کا مالک Adolf Dassler جس نے پہلی عالمی جنگ میں شرکت کے بعد واپس آ کر کھیلوں کے جوتوں کی تیاری کا کام کیا۔ اس نے اپنی عرفیت Adi اور اپنے خاندانی نام Dassler کے ابتدائی تین حروف کو لے کر جمع کیا جس کے نتیجے میں Adidas کا نام سامنے آیا۔Nike: دیوتاجہاں تک مشہور برانڈ Nike کے نام کا تعلق ہے تو مختصرا یہ قدیم یونانی ثقافت میں “فتح کے دیوتا” کا نام ہے۔

دن کی زیادہ پڑھی گئیں پوسٹس‎