Android AppiOS App

بہترین زندگی کے راز, اسپیشل نفسیاتی مسائل کا حل , اپنی صحت بہتربنائیں, اسلام اورہم, ترقی کےراز, عملی زندگی کےمسائل اورحل, تاریخ سےسیکھیئے, سماجی وخاندانی مسائل, ازدواجی زندگی بہتربنائیں , گھریلومسائل, روزمرہ زندگی کےمسائل, گھریلوٹوٹکے اسلامی واقعات, کریئر, کونساپیشہ منتخب کریں, نوجوانوں کے مسائل , بچوں کی اچھی تربیت, بچوں کے مسائل , معلومات میں اضافہ , ہمارا پاکستان, سیاسی سمجھ بوجھ, کالم , طنز و مزاح, دلچسپ سائینسی معلومات, کاروبار کیسے کریں ملازمت میں ترقی کریں, غذا سے علاج, زندگی کےمسائل کا حل قرآن سے, بہترین اردو ادب, سیاحت و تفریح, ستاروں کی چال , خواتین کے لیے , مرد حضرات کے لیے, بچوں کی کہانیاں, آپ بیتی , فلمی دنیا, کھیل ہی کھیل , ہمارا معاشرہ اور اس کی اصلاح, سماجی معلومات, حیرت انگیز , مزاحیہ


زہر بھی حضرت خالدؓ کا کچھ نہ بگاڑ سکا

  جمعرات‬‮ 16 مئی‬‮‬‮ 2019  |  18:06

ﺣﻀﺮﺕ ﺧﺎﻟﺪ ﺑﻦ ﻭﻟﯿﺪ ﺭﺿﯽ ﺍﻟﻠﮧ ﺗﻌﺎﻟٰﯽ ﻋﻨﮧ ﻧﮯ ﺍﯾﮏ ﻋﯿﺴﺎﺋﯿﻮﮞ ﮐﮯ ﮐﺎ ﻣﺤﺎﺻﺮﮦ ﮐﯿﺎ ﺗﻮ ﺍﻥ ﮐﺎ ﺳﺐ ﺳﮯ ﺑﻮﮌﮬﺎ ﭘﺎﺩﺭﯼ ﺁﭖ ﮐﮯ ﭘﺎﺱ ﺁﯾﺎ۔ ﺍﺱ ﮐﮯ ﮨﺎﺗﮫ ﻣﯿﮟ ﺍﻧﺘﮩﺎﺋﯽ ﺗﯿﺰ ﺯﮨﺮ ﮐﯽ ﺍﯾﮏ ﭘﮍﯾﺎ ﺗﮭﯽ۔ ﺍﺱ ﻧﮯ ﺣﻀﺮﺕ ﺧﺎﻟﺪ ﺑﻦ ﻭﻟﯿﺪ ﺳﮯ ﻋﺮﺽ ﮐﯿﺎ ﮐﮧ ﺁﭖ ﮨﻤﺎﺭﮮ ﻗﻠﻌﮧ ﮐﺎ ﻣﺤﺎﺻﺮﮦ ﺍﭨﮭﺎﻟﯿﮟ، ﺍﮔﺮ ﺗﻢ ﻧﮯ ﺩﻭﺳﺮﮮ ﻗﻠﻌﮯ ﻓﺘﺢ ﮐﺮ ﻟﺌﮯ ﺗﻮ ﺍﺱﮐﺎ ﻗﻠﻌﮧ ﮐﺎ ﻗﺒﻀﮧ ﮨﻢ ﺑﻐﯿﺮ ﻟﮍﺍﺋﯽ ﮐﮯ ﺗﻢ ﮐﻮ ﺩﮮ ﺩﯾﮟ ﮔﮯ۔ ﺣﻀﺮﺕ ﺧﺎﻟﺪ ﺭﺿﯽ ﺍﻟﻠﮧ ﺗﻌﺎﻟٰﯽ ﻋﻨﮧ ﻧﮯ ﻓﺮﻣﺎﯾﺎ ﮐﮧ

“ ﻧﮩﯿﮟ ‘ ﮨﻢ ﭘﮩﻠﮯ ﺍﺱ ﻗﻠﻌﮧ ﮐﻮ ﻓﺘﺢ ﮐﺮﯾﮟ ﮔﮯ۔ ﺑﻌﺪ ﻣﯿﮟﮐﺴﯽ

ﺩﻭﺳﺮﮮ ﻗﻠﻌﮯ ﮐﺎ ﺭﺥ ﮐﺮﯾﮟ ﮔﮯ۔ “ ﯾﮧ ﺳﻦ ﮐﺮ ﺑﻮﮌﮬﺎ ﭘﺎﺩﺭﯼ ﺑﻮﻻ۔ “ ﺍﮔﺮ ﺗﻢ ﺍﺱ ﻗﻠﻌﮯ ﮐﺎ ﻣﺤﺎﺻﺮﮦ ﻧﮩﯿﮟ ﺍﭨﮭﺎﺅ ﮔﮯ ﺗﻮ ﻣﯿﮟ ﯾﮧ ﺯﮨﺮ ﮐﮭﺎ ﮐﺮ ﺧﻮﺩﮐﺸﯽ ﮐﺮ ﻟﻮﮞ ﮔﺎ ﺍﻭﺭ ﻣﯿﺮﺍ ﺧﻮﻥ ﺗﻤﮩﺎﺭﯼ ﮔﺮﺩﻥ ﭘﺮ ﮨﻮﮔﺎ۔ “ ﺣﻀﺮﺕ ﺧﺎﻟﺪ ﺭﺿﯽ ﺍﻟﻠﮧ ﺗﻌﺎﻟٰﯽ ﻋﻨﮧ ﻓﺮﻣﺎﻧﮯ ﻟﮕﮯ۔ “ ﯾﮧ ﻧﺎﻣﻤﮑﻦ ﮨﮯ ﮐﮧ ﺗﯿﺮﯼ ﻣﻮﺕ ﻧﮧ ﺁﺋﯽ ﮨﻮ ﺍﻭﺭ ﺗﮧ ﻣﺮ ﺟﺎﺋﮯ۔ “ﺑﻮﮌﮬﺎ ﭘﺎﺩﺭﯼ ﺑﻮﻻ : ﺍﮔﺮ ﺗﻤﮩﺎﺭﺍ ﯾﮧ ﯾﻘﯿﻦ ﮨﮯ ﺗﻮ، ﻟﻮ ﭘﮭﺮ ﯾﮧ ﺯﮨﺮ ﮐﮭﺎ ﻟﻮ۔

ﺣﻀﺮﺕ ﺧﺎﻟﺪ ﺑﻦ ﻭﻟﯿﺪ ﺭﺿﯽ ﺍﻟﻠﮧ ﺗﻌﺎﻟٰﯽ ﻋﻨﮧ ﻧﮯ ﻭﮦ ﺯﮨﺮ ﮐﯽ ﭘﮍﯾﺎ ﭘﮑﮍﯼ ﺍﻭﺭ ﯾﮧ ﺩﻋﺎﺀ ﺑﺴﻢ ﺍﻟﻠﻪ ﻭﺑﺎﻟﻠﻪ ﺭﺏ ﺍﻷﺭﺽ ﻭﺭﺏ ﺍﻟﺴﻤﺎﺀ ﺍﻟﺬﻱ ﻻ ﻳﻀﺮ ﻣﻊ ﺍﺳﻤﻪ ﺩﺍﺀ ﭘﮍﮪ ﮐﺮ ﻭﮦ ﺯﮨﺮ ﭘﮭﺎﻧﮏ ﻟﯿﺎ ﺍﻭﺭ ﺍﻭﭘﺮ ﺳﮯ ﭘﺎﻧﯽ ﭘﯽ ﻟﯿﺎ۔ ﺑﻮﮌﮬﮯ ﭘﺎﺩﺭﯼ ﮐﻮ ﻣﮑﻤﻞ ﯾﻘﯿﻦ ﺗﮭﺎ ﮐﮧ ﯾﮧ ﭼﻨﺪ ﻟﻤﺤﻮﮞ ﻣﯿﮟ ﻣﻮﺕ ﮐﯽ ﻭﺍﺩﯼ ﻣﯿﮟ ﭘﮩﻨﭻ ﺟﺎﺋﯿﮟ ﮔﮯ ﻣﮕﺮ ﻭﮦ ﺩﯾﮑﮫ ﮐﺮ ﺣﯿﺮﺍﻥ ﺭﮦ ﮔﯿﺎ ﮐﮧ ﭼﻨﺪ ﻣﻨﭧ ﺁﭖ ﮐﮯ ﺑﺪﻥ ﭘﺮ ﭘﺴﯿﻨﮧ ﺁﯾﺎ۔ ﺍﺱ ﮐﮯ ﻋﻼﻭﮦ ﮐﭽﮫ ﺑﮭﯽ ﻧﮧ ﮨﻮﺍ۔ﺣﻀﺮﺕ ﺧﺎﻟﺪ ﺑﻦ ﻭﻟﯿﺪ ﺭﺿﯽ ﺍﻟﻠﮧ ﺗﻌﺎﻟٰﯽ ﻋﻨﮧ ﻧﮯ ﭘﺎﺩﺭﯼ ﺳﮯ ﻣﺨﺎﻃﺐ ﮨﻮ ﮐﺮ ﻓﺮﻣﺎﯾﺎ۔ “ ﺩﯾﮑﮭﺎ۔ ﺍﮔﺮ ﻣﻮﺕ ﻧﮧ ﺁﺋﯽ ﮨﻮ ﺗﻮ ﺯﮨﺮ ﮐﭽﮫ ﻧﮩﯿﮟ ﺑﮕﺎﮌﺗﺎ۔ “ ﭘﺎﺩﺭﯼ ﮐﻮﺋﯽ ﺟﻮﺍﺏ ﺩﺋﯿﮯ ﺑﻐﯿﺮ ﺍﭨﮫ ﮐﺮ ﺑﮭﺎﮒ ﮔﯿﺎ ﺍﻭﺭ

ﻗﻠﻌﮧ ﻣﯿﮟ ﺟﺎ ﮐﺮ ﮐﮩﻨﮯ ﻟﮕﺎ۔“ ﺍﮮ ﻟﻮﮔﻮ ! ﻣﯿﮟ ﺍﯾﺴﯽ ﻗﻮﻡ ﺳﮯ ﻣﻞ ﮐﺮ ﺁﯾﺎ ﮨﻮﮞ ﺧﺪﺍ ﺗﻌﺎﻟٰﯽ ﮐﯽ ﻗﺴﻢ ! ﺍﺳﮯ ﻣﺮﻧﺎ ﺗﻮ ﺁﺗﺎ ﮨﯽ ﻧﮩﯿﮟ۔ ﻭﮦ ﺻﺮﻑ ﻣﺎﺭﻧﺎ ﮨﯽ ﺟﺎﻧﺘﮯ ﮨﯿﮟ۔ ﺟﺘﻨﺎ ﺯﮨﺮ ﺍﻥ ﮐﮯ ﺍﯾﮏ ﺁﺩﻣﯽ ﻧﮯ ﮐﮭﺎ ﻟﯿﺎ، ﺍﮔﺮ ﺍﺗﻨﺎ ﭘﺎﻧﯽ ﻣﯿﮟ ﻣﻼ ﮐﺮ ﮨﻢ ﺗﻤﺎﻡ ﺍﮨﻞ ﻗﻠﻌﮧ ﮐﮭﺎﺗﮯ ﺗﻮ ﯾﻘﯿﻨﺎً ﻣﺮ ﺟﺎﺗﮯ ﻣﮕﺮ ﺍﺱ ﺁﺩﻣﯽ ﮐﺎ ﻣﺮﻧﺎ ﺗﻮ ﺩﺭﮐﻨﺎﺭ، ﻭﮦ ﺑﮯ ﮨﻮﺵ ﺑﮭﯽ ﻧﮩﯿﮟ ﮨﻮﺍ۔ ﻣﯿﺮﯼ ﻣﺎﻧﻮ ﺗﻮ ﻗﻠﻌﮧ ﺍﺱ ﮐﮯ ﺣﻮﺍﻟﮯ ﮐﺮ ﺩﻭ ﺍﻭﺭ ﺍﻥ ﺳﮯ ﻟﮍﺍﺋﯽ ﻧﮧ ﮐﺮﻭ۔ “ ﭼﻨﺎﻧﭽﮧ ﻭﮦ ﻗﻠﻌﮧ ﺑﻐﯿﺮ ﻟﮍﺍﺋﯽ ﮐﮯ ﺻﺮﻑ ﺣﻀﺮﺕ ﺧﺎﻟﺪ ﺑﻦ ﻭﻟﯿﺪ ﺭﺿﯽ ﺍﻟﻠﮧ ﺗﻌﺎﻟٰﯽ ﻋﻨﮧ ﮐﯽ ﻗﻮﺕ ﺍﯾﻤﺎﻧﯽ ﺳﮯ ﻓﺘﺢ ﮨﻮﮔﯿﺎ۔

دن کی زیادہ پڑھی گئیں پوسٹس‎