بہترین زندگی کے راز, اسپیشل نفسیاتی مسائل کا حل , اپنی صحت بہتربنائیں, اسلام اورہم, ترقی کےراز, عملی زندگی کےمسائل اورحل, تاریخ سےسیکھیئے, سماجی وخاندانی مسائل, ازدواجی زندگی بہتربنائیں , گھریلومسائل, روزمرہ زندگی کےمسائل, گھریلوٹوٹکے اسلامی واقعات, کریئر, کونساپیشہ منتخب کریں, نوجوانوں کے مسائل , بچوں کی اچھی تربیت, بچوں کے مسائل , معلومات میں اضافہ , ہمارا پاکستان, سیاسی سمجھ بوجھ, کالم , طنز و مزاح, دلچسپ سائینسی معلومات, کاروبار کیسے کریں ملازمت میں ترقی کریں, غذا سے علاج, زندگی کےمسائل کا حل قرآن سے, بہترین اردو ادب, سیاحت و تفریح, ستاروں کی چال , خواتین کے لیے , مرد حضرات کے لیے, بچوں کی کہانیاں, آپ بیتی , فلمی دنیا, کھیل ہی کھیل , ہمارا معاشرہ اور اس کی اصلاح, سماجی معلومات, حیرت انگیز , مزاحیہ


پاکستان اور فوج کیخلاف باتیں کرنے پر مولانا فضل الرحمان پھنس گئے، بڑا مطالبہ کردیاگیا

  جمعرات‬‮ 21 ‬‮نومبر‬‮ 2019  |  13:25

تنظیمات اہلسنت کے رہنماؤں پیر غلام شاہ رضوانی، صاحبزادہ ابوالخیرمحمد زبیر، ثروت اعجاز قادری، حاجی گلشن الٰہی سمیت دیگر علماء نے حیدرآبا دکے مقامی ہوٹل میں علماء و مشائخ استحکام پاکستان کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ مولانا فضل الرحمن نے پاکستان اور فوج کیخلاف جو باتیں کی ہیں اس پر ان کیخلاف مقدمہ درج کیا جائے۔مولانا فضل الرحمن نے مختلف اشاروں پر مسئلہ کشمیر کو دبایا وہ جب کشمیر کمیٹی کے چیئرمین تھے تو انہوں نے کوئی کام نہیں کیا اور جیسے ہی انہیں ہٹایا گیا تو انہیں کشمیر یاد آگیا۔ وہ آزادی مارچ لے کر اسلام

آباد

سے رسوا ہوکر نکلے ہیں، انہوں نے بڑے دعوے کئے تھے لیکن حکومت نے انہیں فیس سیونگ بھی نہیں دی اور اب وہ رہبر کمیٹی کا ڈرامہ رچارہے ہیں، انہوں نے کہاکہ نے کہاکہ پوری دنیا میں مسلمانوں کی نسل کشی ہورہی ہے، علمائے اہل سنت کے مزارات کو نقصان پہنچایا جارہا ہے ایسی صورت میں آل پاکستان سنی کانفرنس بلائی جائے۔حاجی انہوں نے کہاکہ پاکستان جو لاکھوں قربانی دے کر بنایا تھا اس کی حفاظت بھی ہمیں کرنی ہے، مولانا فضل الرحمن کشمیر کمیٹی کے عرصے دراز سے چیئرمین کے عہدے پر فائز رہے کشمیر آزاد کرانا تو دو رکی بات ہے کوئی قدم بھی نہیں اٹھایا، وہ چیئرمین شپ سے ہٹائے جانے کے بعد انہیں کشمیری بھائیوں کی قدر یاد آگئی، انہوں نے کہاکہ کشمیر کی آزادی کیلئے ہمیں پاک افواج کا ساتھ دینا ہوگا،

مودی اور بھارتی فوج نے مسلمانوں کی جذبہ آزادی کو روکنے کیلئے ان کی عصمت دری کی جارہی ہے ہے، انہوں ن ے کہاکہ تمام مسائل کا حل نظام مصطفی کا قیام میں ہے یہ ملک نظام مصطفی کیلئے بنایا تھا اور یہ ہی اس کا حل ہے۔ انہوں نے کہاکہ مودی اور بھارتی فوج نے مقبوضہ کشمیر میں مسلمانوں کے جذبہ آزادی کو روکنے کیلئے وہاں مظلوم خواتین کی عصمت دری کا سلسلہ شروع کیا ہوا ہے، انہوں نے کہاکہ آزادی مارچ کی وجہ سے کشمیری مسلمانوں پر جاری بھارتی مظالم سے اقوام عالم کی توجہ ہٹانے کی کوشش کی گئی جس سے کشمیر کاز کو نقصان پہنچا۔ انہوں نے کہاکہ مقبوضہ کشمیر میں تین ماہ سے کرفیو کے سبب لاکھوں کشمیری اپنے گھروں میں قید ہیں، وہاں انسانی حقوق کی خلاف ورزی کی جارہی ہے، بھارتی فوج درندگی کے ذریعے کشمیری عوام کی آواز کو دبانا چاہتے ہیں۔ حکومت پاکستان اس معاملے پر خصوصی توجہ دے اور مظلوم کشمیریوں کی فوری داد رسی کرے۔ انہوں نے کہاکہ تمام سنی ناموس رسالت ﷺ اور ناموس صحابہ پر متحد ہوجائیں، اپنی اَنا چھوڑ دیں، ملک کو خطرات درپیش ہیں، آزادی مارچ کے نام پر ہندوستانی آقاؤں کو خوش کرنے کی کوشش کی گئی، یہ مارچ شہداء کے لہو سے غداری ہے، چند سالوں میں پاکستان میں دہشت گردی سے 50ہزار افراد شہید ہوئے،

ایک کروڑ افراد معاشی مشکلات میں مبتلا ہوئے، افواج پاکستان نے اپنی جانوں کے نذرانے پیش کئے۔ انہوں نے کہاکہ جن کے آباؤ اجداد پاکستان کے مخالف تھے وہ آج بھی اپنی روش جاری رکھے ہوئے ہیں۔ انہوں نے کہا ہے کہ ملک کے دفاع کیلئے مشائخ، علماء اور آستانوں سے وابستہ لاکھوں افراد پاک فوج کے ساتھ ہیں، کشمیر میں بھارتی مظالم کا منہ توڑ جواب دیا جائے، امتناعہ قادیانی آرڈنینس پر مکمل عملدرآمد اور قادیانیوں کو آئین و قانون کا پابند کیا جائے۔کانفرنس سے حافظ مطلوب احمد، سید برکات رضوی، پیر سید حکیم انصار، خالد حسن عطاری، محمد عمران سہروردی، صاحبزادہ پیر محمد حسان، علامہ محرم الدین قادری اور دیگر نے بھی خطاب کیا۔


دن کی زیادہ پڑھی گئیں پوسٹس‎