بہترین زندگی کے راز, اسپیشل نفسیاتی مسائل کا حل , اپنی صحت بہتربنائیں, اسلام اورہم, ترقی کےراز, عملی زندگی کےمسائل اورحل, تاریخ سےسیکھیئے, سماجی وخاندانی مسائل, ازدواجی زندگی بہتربنائیں , گھریلومسائل, روزمرہ زندگی کےمسائل, گھریلوٹوٹکے اسلامی واقعات, کریئر, کونساپیشہ منتخب کریں, نوجوانوں کے مسائل , بچوں کی اچھی تربیت, بچوں کے مسائل , معلومات میں اضافہ , ہمارا پاکستان, سیاسی سمجھ بوجھ, کالم , طنز و مزاح, دلچسپ سائینسی معلومات, کاروبار کیسے کریں ملازمت میں ترقی کریں, غذا سے علاج, زندگی کےمسائل کا حل قرآن سے, بہترین اردو ادب, سیاحت و تفریح, ستاروں کی چال , خواتین کے لیے , مرد حضرات کے لیے, بچوں کی کہانیاں, آپ بیتی , فلمی دنیا, کھیل ہی کھیل , ہمارا معاشرہ اور اس کی اصلاح, سماجی معلومات, حیرت انگیز , مزاحیہ


پیسوں سے ہر چیز خریدی نہیں جاسکتی

  منگل‬‮ 16 مئی‬‮‬‮ 2017  |  19:05

راما اپنی فیملی میں اکیلا کمانے والا اور سخت محنت کرنے والا انسان تھا۔ اس کے تین بچے جن میں دو بیٹے اور ایک بیٹی تھی۔ وہ اپنے ماں باپ کے ساتھ رہ رہا تھا۔ راما اپنے بچوں اور فیملی کی بہتر مستقبل کے لیے سخت محنت کرتا تھا ۔ وہ دن میں سولہ گھنٹے کام کرتا رہتا، اس کے بچے اسے ہفتوں تک نہیں دیکھ پاتے تھے کیونکہ وہ صبح سویرے گھر سے نکل جاتا اور رات گئے گھر لوٹتا تھا۔ اس کی فیملی اس کے ساتھ چند خوشگوار لمحے گزارنے کے لیے بے تاب ہوتی تھی،

اور بچے اپنے پاپا کے لیے دن بھردروازے کو تکتے رہتے تھے ۔ اس کے بچوں کو امید ہوتی تھی کہ شاید ہفتے میں اتوار کے دن اپنے پاپا کے ساتھ وقت گزارنے کا موقع میسر ہوگا لیکن راما اپنی فیملی کی ضرورتوں کو پورا کرنے کے لیے اتوار کے دن بھی کام کرتا رہتا تھا۔ وہ زیادہ پیسوں کے لیے چھٹی کے دن بھی کسی اور کمپنی میں پارٹ ٹائم جاب کرتا تھا۔ اس وجہ سے اسکی بیوی ، بچے اور والدین شدید بے چینی کا شکار تھے۔

راما کو اپنی محنت کی وجہ سے ترقی ملی ۔ وہ اپنی فیملی کے ساتھ ایک چھوٹے گھرسے بڑے اور مہنگے گھر میں شفٹ ہوا اور انکی زندگی پہلے سے زیادہ خوشحال ہوگئی۔ راما اب زیادہ سے زیادہ کمانے کے لیے پہلے کی نسبت سخت محنت کرنے لگا۔ ایک دن اس کی بیوی اس سے شکوہ کرنے لگی کہ، کب تک اس طرح پیسوں کے پیچھے بھاگتے رہو گے؟ ہم سارے خوش ہیں اور ہم لوگ ان پیسوں سے بہتر زندگی گزار سکتے ہیں۔ اب اس گھر کو پیسوں کی نہیں تمہاری ضرورت ہے۔ راما مسکرایا اور جواب دیا۔ میں اپنے بچوں اوروالدین کو دنیا کی ساری آسائشیں دینا چاہتا ہوں تاکہ میرے بچے فخر سے اپنی زندگی گزار سکیں۔ ایک دن اسکے گھر والوں نے شہر سے دور سمندر پہ گھومنے کا پروگرام بنایا۔ اس کی بیٹی نے کہا، پاپا آج آپ آفس نہیں جائیں اور ہمارے ساتھ گھومنے چلیں !! راما نے اپنی بیٹی کو جواب دیا ، بیٹی کسی ضروری کام کی وجہ سے اس بار میں آ پ لوگوں کے ساتھ ساتھ نہیں آسکوں گا میں وعدہ کرتا ہوں کہ اگلے ویک اینڈ پہ میں آپ سب کو مہنگے ترین جگہ پہ گھمانے لے جاؤ ں گا۔ اس کی بیٹی یہ سن کر خوش ہوئی اور سارے گھر والے سمندر پہ گھمانے چلے گئے۔

بدقسمتی سے اگلے دن سونامی آئی اور اسکی پوری فیملی سمندر میں غرق ہوگئی۔ جب راما کو سونامی کے خبر کا پتہ چلا تو اس کے سارے ہوش اڑ گئے۔ا پنے دفتر کے سارے کام چھوڑ کر بھاگتا ہوا سمندر پہ گیا۔ساحل سمندر پہ آبادی کا وجود ہی ختم ہوگیا تھا۔ راما کو اپنی فیملی کی لاشیں بھی نہیں مل رہی تھیں۔ وہ یہ سوچ کر رو رہا تھا کہ وہ اب اپنی فیملی کے ساتھ کبھی مل نہیں سکے گا۔ اب اسکے بچے کبھی بھی لوٹ کر نہیں آسکیں گے۔ اسکی بیٹی کی آواز بار بار اسکی ضمیر کو جنجھوڑ رہی تھی، لیکن اب وہ کچھ نہیں کر سکتا تھا ، اربوں ہونے کے باوجود لاوارث ہوگیا ہے۔ سچ ہی کہا ہے کسی نے کہ پیسہ ہی سب کچھ نہیں ہوتا، انسان کو اپنی فیملی اور پیاروں کو بھی وقت دینا چاہیے پتہ نہیں کب کون بچھڑ جائے۔

دن کی بہترین پوسٹ پڑھنے کےلئے لائف ٹپس فیس بک پیج پر میسج بٹن پر کلک کریں۔۔

loading...

دن کی زیادہ پڑھی گئیں پوسٹس‎