عائشہ گلائی خطرناک مرض میں مبتلا، وزن گرنے لگا، تشویشناک انکشاف

  جمعرات‬‮ 12 اکتوبر‬‮ 2017  |  19:53

پاکستان تحریک انصاف کی سابق رہنما عائشہ گللائی ڈپریشن کا شکار ہو گئی ہیں، ڈاکٹروں نے انہیں مشورہ دیا ہے کہ وہ خود کو ٹینشن سے مکمل طور پر دور رکھیں اور مکمل آرام کریں ورنہ ڈپریشن اور ذہنی دباﺅ سے خطرناک مرض لاحق ہو سکتا ہے۔ تفصیلات کے مطابق چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان سے تنازعہ کے بعد عائشہ گلالئی گوناگوں مسائل کا شکار ہو چکی ہیں جس میں معاشی، سماجی، معاشرتی اورسیاسی مسائل شامل ہیں۔ جنہوں نے ان کی جسمانی صحت پر برے اثرات مرتب کئے ہیں۔ جس سے ان کے وزن میں بھی کمی واقع ہوئی ہے۔ ڈپریشن سے شدید متاثر ہونے کے بعد پی ٹی آئی کی سابق رہنما عائشہ گلالئی وفاقی دارالحکومت کے سرکاری ہسپتال پولی کلینک پہنچ گئی ہیں۔ ہسپتال پہنچ کر ڈپریشن کے ماہر ڈاکٹر سے اپنی صحت کے بارے میں مشورہ

بارے میں مشورہ کیا۔ ہسپتال میں عائشہ گلالئی خاموش اور خیفہ طریقے سے آئی تھیں تاکہ میڈیا کی آنکھ سے دور رہ سکیں۔ ہسپتال ذرائع نے بتایا کہ عائشہ گلالئی کو ڈپریشن کا مرض لاحق ہے جس سے ان کی طبیعت ناساز ہو چکی ہے اور ان کی معمول کی سرگرمیوں پر بھی منفی اثرات مرتب ہوئے ہیں۔ ہسپتال ذرائع کے مطابق ابتدائی معائنہ کے بعد دوائیاں دے کر عائشہ گلالئی کو ہسپتال سے ڈسچارج کر دیا گیا ہے۔ آن لائن نے جب ہسپتال کے ترجمان سے رابطہ کیا تو انہوں نے خبر کی تردید کی اور نہ تصدیق کی بلکہ خاموشی اختیار کر لی۔