بہترین زندگی کے راز, نفسیاتی مسائل کا حل , اپنی صحت بہتربنائیں, اسلام اورہم, ترقی کےراز, عملی زندگی کےمسائل اورحل, تاریخ سےسیکھیئے, سماجی وخاندانی مسائل, ازدواجی زندگی بہتربنائیں , گھریلومسائل, روزمرہ زندگی کےمسائل, گھریلوٹوٹکے اسلامی واقعات, کریئر, کونساپیشہ منتخب کریں, نوجوانوں کے مسائل , بچوں کی اچھی تربیت, بچوں کے مسائل , معلومات میں اضافہ , ہمارا پاکستان, سیاسی سمجھ بوجھ, کالم , طنز و مزاح, دلچسپ سائینسی معلومات, کاروبار کیسے کریں ملازمت میں ترقی کریں, غذا سے علاج, زندگی کےمسائل کا حل قرآن سے, بہترین اردو ادب, سیاحت و تفریح, ستاروں کی چال , خواتین کے لیے , مرد حضرات کے لیے, بچوں کی کہانیاں, آپ بیتی , فلمی دنیا, کھیل ہی کھیل , ہمارا معاشرہ اور اس کی اصلاح, سماجی معلومات, حیرت انگیز , مزاحیہ

ہوشیار خبردار!ایموکسل اورآگمنٹین استعمال نہ کریں محکمہ صحت کی جانب سے پاکستانیوں کیلئے اہم اعلامیہ جاری

  پیر‬‮ 16 اپریل‬‮ 2018  |  13:38

معروف سیرپ اموکسل اور آگمنٹن غیر معیاری قرار۔محکمہ صحت پنجاب کی جانب سے ملٹی نیشنل کمپنی گلیکسو سمتھ کلائن( جی ایس کے ) سے بچوں میں انفیکشن سے ہونے والی بیماریوں کے لئے استعمال ہونے والے معروف اینٹی بائیو ٹیک سیرپ آگمنٹن ڈی ایس اور اموکسل سسپنشن کی خریداری کے لئے ٹینڈرز کئے گئے ،معمول کے مطابق نمونہ جات سرکاری میڈیکل سٹور ڈپو سندر اسٹیٹ سے حاصل کئے گئےجن کو ڈرگ ٹیسٹنگ لیبارٹری سے چیک کرایا گیا جس نے سیرپ کو سب سٹینڈرڈ قرار دے دیا ۔اس کے بعدبیچ کی تمام ادویات (سیرپ) فوری روکنے کے احکامات جاری کر دئیے

جاری کر دئیے گئے ۔ دوسری جانب ملٹی نیشنل کمپنی کی جانب سے اس بیچ کے لاکھوں سیرپ کہاں کہاں پرائیویٹ سطح پر مارکیٹ کئے گئے تا حال علم سے باہر ہیں اب ڈی ٹی ایل اور پراونشل ڈرگ کنٹرول ونگ کی جانب سے ان ادویات کی تعداد اور پھیلائو کے حوالے سے معلومات لے کر مارکیٹ میں الرٹ جاری کیا جائے گا

اور تمام ادویات کو واپس منگوایا جائے گا مگر ابھی تک صرف سرکاری سطح پر خریدی جانے والی ادویات کے بارے الرٹ جاری کیا گیا ہے جبکہ نجی مارکیٹ کے میڈیکل سٹوروں پر کون سا بیچ بک رہا ہے معلومات حاصل کرنا ضروری ہے ۔اس لئے والدین کوہوشیاررہنا چاہیے ۔ڈرگ ٹیسٹنگ لیبارٹریپنجاب کے ڈائریکٹر ڈاکٹر شفیق نے بتایاہمارا فرض ہے کہ ہم تمام ادویات کی ٹیسٹنگ کے قانونی تقاضے پورے کریں، وہ ذمہ داری ہم نے پوری کردی ہوسکتا ہے کمپنی کے چیلنج کرنے پر نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف ہیلتھ اسے معیاری قرار دیدے ، ہم اس پر کچھ نہیں کہہ سکتے ۔ ایڈیشنل سیکرٹری ڈرگ کنٹرول پنجاب ڈاکٹر سہیل احمد نے کہاکہ یہ نمونے چیک کرنا ہمارا معمول کا کام ہے ناقص ادویات والوں کو معاف نہیں کیا جائے گا اور ان کے خلاف مکمل قانونی کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔

ماہر فارما سسٹ قانون دان نور مہر نے کہا کہ سب سٹینڈرڈ ادویات کا مطلب ہے کہ دوا مطلوبہ نتائج نہیں دے گی اس کے سائیڈ افیکٹ بھی ہوسکتے ہیں ۔ ترمیمی ایکٹ2017کے مطابق اس کی سزا 3کروڑ جرمانہ ،تین سال قید ہے اور یہ ناقابل ضمانت جرم ہے۔

دن کی زیادہ پڑھی گئیں پوسٹس‎