بہترین زندگی کے راز, نفسیاتی مسائل کا حل , اپنی صحت بہتربنائیں, اسلام اورہم, ترقی کےراز, عملی زندگی کےمسائل اورحل, تاریخ سےسیکھیئے, سماجی وخاندانی مسائل, ازدواجی زندگی بہتربنائیں , گھریلومسائل, روزمرہ زندگی کےمسائل, گھریلوٹوٹکے اسلامی واقعات, کریئر, کونساپیشہ منتخب کریں, نوجوانوں کے مسائل , بچوں کی اچھی تربیت, بچوں کے مسائل , معلومات میں اضافہ , ہمارا پاکستان, سیاسی سمجھ بوجھ, کالم , طنز و مزاح, دلچسپ سائینسی معلومات, کاروبار کیسے کریں ملازمت میں ترقی کریں, غذا سے علاج, زندگی کےمسائل کا حل قرآن سے, بہترین اردو ادب, سیاحت و تفریح, ستاروں کی چال , خواتین کے لیے , مرد حضرات کے لیے, بچوں کی کہانیاں, آپ بیتی , فلمی دنیا, کھیل ہی کھیل , ہمارا معاشرہ اور اس کی اصلاح, سماجی معلومات, حیرت انگیز , مزاحیہ

نواز شریف نے نریندر مودی کے کہنے پر ممبئی حملوں بارے متنازعہ انٹرویو دیا، دونوں کے درمیان رابطے کا کردار بھارتی گجرات کا ایک بزنس مین ادا کر رہا ہے، انٹرویو کس پاکستانی سیاستدان نے لکھ کر دیا؟ جاوید چوہدری اند ر کی کہانی سامنے لے آئے

  جمعرات‬‮ 17 مئی‬‮‬‮ 2018  |  13:32

ملک کے معروف صحافی ، کالم نگار و تجزیہ کار جاوید چوہدری نے اپنے تازہ کالم میں انکشاف کیا ہے کہ ڈان لیکس اور نواز شریف کا سرل المیڈا کو دیا گیا حالیہ متنازعہ انٹرویوبھارتی میڈیا میں ”اوور پلے“ ہوئے۔ ”اوورپلے“ کا یہ کام بھارتی گجرات کے ایک ارب پتی بزنس مین نے کیا‘ یہ بزنس مین نریندر مودی اور میاں نواز شریف کے درمیان رابط ہیں چنانچہ کہا جاسکتا ہے نریندر مودی اور امریکا میاں نواز شریف کے ان خیالات کے بینی فیشری ہیں‘ یہ دونوں ”ہم نہ کہتے تھے یہ گند پاکستان پھیلا رہا ہے“ کا کے پاک

فوج کو ٹائیٹ کر رہے ہیں۔جاوید چوہدری نے انکشاف کرتے ہوئے اپنے کالم میں لکھا ہے کہ سرل المیڈا کے ڈان ٹو کے متنازعہ فقرے کے ڈیزائنر بھی مشاہد حسین سید ہیں‘ پارٹی بھی نواز شریف کے نقطہ نظرکے خلاف ہے۔حکومت نے 6 اکتوبر2016ءکو سرل المیڈا کے ذریعے ڈان میں ایک خبر لیک کرائی‘ وہ خبر ڈان لیکس کے نام سے مشہور ہوئی‘ آپ طارق فاطمی کے ڈرافٹس کا تجزیہ کرا لیں‘حقیقت تک پہنچتے دیر نہیں لگے گی‘ پرویز رشید نے خبر کی اشاعت میں سہولت کاری کی تھی

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)ملک کے معروف صحافی ، کالم نگار و تجزیہ کار جاوید چوہدری نے اپنے تازہ کالم میں انکشاف کیا ہے کہ ڈان لیکس اور نواز شریف کا سرل المیڈا کو دیا گیا حالیہ متنازعہ انٹرویوبھارتی میڈیا میں ”اوور پلے“ ہوئے۔ ”اوورپلے“ کا یہ کام بھارتی گجرات کے ایک ارب پتی بزنس مین نے کیا‘ یہ بزنس مین نریندر مودی اور میاں نواز شریف کے درمیان رابط ہیں چنانچہ کہا جاسکتا ہے نریندر مودی اور امریکا میاں نواز شریف کے ان خیالات کے بینی فیشری ہیں‘ یہ دونوں ”ہم نہ کہتے تھے یہ گند پاکستانپھیلا رہا ہے“ کا واویلا کر کے پاک فوج کو ٹائیٹ کر رہے ہیں۔جاوید چوہدری نے انکشاف کرتے ہوئے اپنے کالم میں لکھا ہے کہ سرل المیڈا کے ڈان ٹو کے متنازعہ فقرے کے ڈیزائنر بھی مشاہد حسین سید ہیں‘ پارٹی بھی نواز شریف کے نقطہ نظرکے خلاف ہے۔حکومت نے 6 اکتوبر2016ءکو سرل المیڈا کے ذریعے ڈان میں ایک خبر لیک کرائی‘ وہ خبر ڈان لیکس کے نام سے مشہور ہوئی‘ آپ طارق فاطمی کے ڈرافٹس کا تجزیہ کرا لیں‘حقیقت تک پہنچتے دیر نہیں لگے گی‘ پرویز رشید نے خبر کی اشاعت میں سہولت کاری کی تھی