بہترین زندگی کے راز, نفسیاتی مسائل کا حل , اپنی صحت بہتربنائیں, اسلام اورہم, ترقی کےراز, عملی زندگی کےمسائل اورحل, تاریخ سےسیکھیئے, سماجی وخاندانی مسائل, ازدواجی زندگی بہتربنائیں , گھریلومسائل, روزمرہ زندگی کےمسائل, گھریلوٹوٹکے اسلامی واقعات, کریئر, کونساپیشہ منتخب کریں, نوجوانوں کے مسائل , بچوں کی اچھی تربیت, بچوں کے مسائل , معلومات میں اضافہ , ہمارا پاکستان, سیاسی سمجھ بوجھ, کالم , طنز و مزاح, دلچسپ سائینسی معلومات, کاروبار کیسے کریں ملازمت میں ترقی کریں, غذا سے علاج, زندگی کےمسائل کا حل قرآن سے, بہترین اردو ادب, سیاحت و تفریح, ستاروں کی چال , خواتین کے لیے , مرد حضرات کے لیے, بچوں کی کہانیاں, آپ بیتی , فلمی دنیا, کھیل ہی کھیل , ہمارا معاشرہ اور اس کی اصلاح, سماجی معلومات, حیرت انگیز , مزاحیہ


تھر میں بچوں کی ہلاکت، حکمران کہاں ہے؟

  پیر‬‮ 11 جون‬‮ 2018  |  13:35

رواں ماہ تھر میں بھوک سے مرنے والے بچوں کی تعداد 60 ہو گئی ہیں سب سے زیادہ ہلاکتیں مٹھی میں واقع ہوئی ہیںایسا پہلی دفعہ ایسا نہیں ہوا بلکہ ماضی میں بھی سیکڑوں کی تعداد میں بچے مر چکے ہیں یہ وہ علاقہ ہے جہاں پانی و خوراک کی قلت ہے میڈیا تو برسراقتدار لوگو تک تھر کے مظلوم لوگوکی آواز پہنچا رہا ہے مگر حکمرانوں کے کانوںمیں جوں تک نہیں رینگ رہی۔اس سے پہلے کراچی میں بھی ناقص انتظامات اور ہسپتالوں کی قلت کی وجہ سے 1500 سے زائد افراد لقمہ اجل ہوچکے ہیں مگر انھوں نے اس

سے بھی سبق نہیں سیکھا تھا۔ مجھے حیرانگی ہوتی ہے ایسی جماعت پر جو کراچی سے خیبر تک پاکستان بند کرنے کی دھمکی دے سکتی ہے، بلاول کی آمد پر کراچی کی شاہراہیں بند ہو سکتی ہیں،رینٹل پاور پروجیکٹ اور حاجیوں کو ایسی بھُرتی کے ساتھ لُوٹ سکتی ہے کہ نیب کو بھی نہ پتا چلے تو کیا یہ تھر کے متاثرہ علاقوں کے حالت زار کے بارے میں نہیں سوچ سکتی۔ حکمران لوگ کسی بھی ریاست کے رکھوالے ہوتے ہیں اور عوام کو بنیادی سہولیات فراہم کرنا انکی ذمہ داری ہوتی ہے، ہمارے حکمرانوں کو ان باتوں کو سمجھنا چاہیے اور عیش وعشرت کو چھوڑ کر عوام کے مسائل پر توجہ دینی چاہیے

دن کی زیادہ پڑھی گئیں پوسٹس‎