بہترین زندگی کے راز, نفسیاتی مسائل کا حل , اپنی صحت بہتربنائیں, اسلام اورہم, ترقی کےراز, عملی زندگی کےمسائل اورحل, تاریخ سےسیکھیئے, سماجی وخاندانی مسائل, ازدواجی زندگی بہتربنائیں , گھریلومسائل, روزمرہ زندگی کےمسائل, گھریلوٹوٹکے اسلامی واقعات, کریئر, کونساپیشہ منتخب کریں, نوجوانوں کے مسائل , بچوں کی اچھی تربیت, بچوں کے مسائل , معلومات میں اضافہ , ہمارا پاکستان, سیاسی سمجھ بوجھ, کالم , طنز و مزاح, دلچسپ سائینسی معلومات, کاروبار کیسے کریں ملازمت میں ترقی کریں, غذا سے علاج, زندگی کےمسائل کا حل قرآن سے, بہترین اردو ادب, سیاحت و تفریح, ستاروں کی چال , خواتین کے لیے , مرد حضرات کے لیے, بچوں کی کہانیاں, آپ بیتی , فلمی دنیا, کھیل ہی کھیل , ہمارا معاشرہ اور اس کی اصلاح, سماجی معلومات, حیرت انگیز , مزاحیہ

اگر آپ کو ایک گانا بار بار سنائی دے رہا ہے تو آپ سنگین بیماری میں مبتلا ہیں

  ہفتہ‬‮ 23 جون‬‮ 2018  |  16:38

برطانیہ میں ایک شخص عجیب دماغی کیفیت کا شکار ہوگیا ہے جس میں قومی ترانہ لگاتار ان کے ذہن میں گونجتا رہتا ہے اور کسی بھی طرح وہ اس صورتحال سے جان نہیں چھڑا سکتے۔ برطانیہ کا 87 سالہ شہری رون گولڈاسپنک کے دماغ میں مسلسل ملک کا قومی ترانہ بجتا رہتا ہے اور یہ مسئلہ روز بروز شدت اختیار کررہا ہے ۔ طب کی زبان میں اس کیفیت کو ’میوزیکل ایئر سنڈروم‘ (ایم ای ایس) کہا جاتا ہے، بہرے یا کم سننے والے افراد اس کے زیادہ شکار ہوتے ہیں اور انہیں آوازوں کا وہم (آڈٹری ہیلیوسنیشن) ہوجاتا ہے۔

بھی اس کے شکار ہیں لیکن انہیں صرف برطانوی قومی ترانہ سنائی دیتا ہے۔ اب تک اس کی وجوہ معلوم نہیں ہوسکی ہیں تاہم ماہرین کا خیال ہے کہ جب سننے کا احساس کم ہوجاتا ہے تو یہ کیفیت سر اٹھاتی ہے اور جب کانوں تک آواز نہیں پہنچتی تو دماغ ازخود آوازیں بنانے لگتا ہے جب کہ متاثرہ سماعت والے افراد اس کا زیادہ شکار ہوتے ہیں، صرف برطانیہ میں 65 سال سے زائد عمر کے 10 ہزار میں سے ایک فرد اس کا شکار ہے۔بزرگ شہری کا کہنا ہے کہ یہ کیفیت 3 سے 4 ماہ قبل پیدا ہوئیاس کیفیت میں خدا ملکہ کی حفاظت کرے (گاڈ سیو دی کوئین) کا مردانہ آواز والا حصہ ان کے ذہن میں گونجتا رہتا ہے، پہلے مجھے خیال آیا کہ شاید پڑوس میں یہ قومی ترانہ بج رہا ہے اور اس کی شکایت ان کے بیٹے نے علاقائی کونسل کو کردی تو معلوم ہوا کہ پڑوس میں کسی نے بھی یہ قومی ترانہ کبھی نہیں چلایا تاہم بعد میں معلوم ہوا کہ یہ ان کے دماغ کی کارستانی ہے۔ ہفتے میں قریباً 1700 مرتبہ وہ قومی ترانہ سنتے ہیں اور کبھی کبھی اس کی آواز اتنی اونچی ہوجاتی ہے کہ وہ بے حال ہوجاتے ہیں۔ اس کیفیت کا علاج کسی ڈاکٹر کے پاس نہیں اور اس سے بچنے کے لیے وہ ایک کان میں آلہ سماعت لگا کر ٹی وی کی آواز کھول دیتے ہیں جس سے دماغی آواز کم ہوجاتی ہے۔ اگلے ماہ ان کے گاؤں میں ملکہ ایلزبتھ آرہی ہیں اور وہ پرامید ہیں کہ وہ ملکہ سے ملکر کہیں گے کہ وہ ملکہ سے زیادہ قومی ترانہ سنتے ہیں کیونکہ یہ بغیر رکے ان کے دماغ میں بجتا رہتا ہے۔

دن کی زیادہ پڑھی گئیں پوسٹس‎