Android AppiOS App

بہترین زندگی کے راز, اسپیشل نفسیاتی مسائل کا حل , اپنی صحت بہتربنائیں, اسلام اورہم, ترقی کےراز, عملی زندگی کےمسائل اورحل, تاریخ سےسیکھیئے, سماجی وخاندانی مسائل, ازدواجی زندگی بہتربنائیں , گھریلومسائل, روزمرہ زندگی کےمسائل, گھریلوٹوٹکے اسلامی واقعات, کریئر, کونساپیشہ منتخب کریں, نوجوانوں کے مسائل , بچوں کی اچھی تربیت, بچوں کے مسائل , معلومات میں اضافہ , ہمارا پاکستان, سیاسی سمجھ بوجھ, کالم , طنز و مزاح, دلچسپ سائینسی معلومات, کاروبار کیسے کریں ملازمت میں ترقی کریں, غذا سے علاج, زندگی کےمسائل کا حل قرآن سے, بہترین اردو ادب, سیاحت و تفریح, ستاروں کی چال , خواتین کے لیے , مرد حضرات کے لیے, بچوں کی کہانیاں, آپ بیتی , فلمی دنیا, کھیل ہی کھیل , ہمارا معاشرہ اور اس کی اصلاح, سماجی معلومات, حیرت انگیز , مزاحیہ


کیا رسولﷺ نے صبح نہار منہ پانی پینے سے منع فرمایا ہے؟

  بدھ‬‮ 27 جون‬‮ 2018  |  10:13

لاہور(ایس چودھری)صبح اٹھتے ہی خالی پیٹ پانی پینے کے حوالے سے قدیم و جدید تحقیقات موجود ہیں جن کے مطابق نہار منہ پانی پیا جائے تو اس سے صحت پر اچھے اثرات مرتب ہوتے ہیں ۔بہت سے مسلمان اسکے برعکس صبح خالی پیٹ پانی پینا جائز نہیں سمجھتے کیونکہ ان کے مطابق اللہ کے رسول ﷺ نے نہار منہ پانی پیان صحتکے لئے نقصان دہ بتایا ہے ۔ اس حدیث مبارکہ میں نہار منہ پانی پینے سے منع کیا گیا ہے کیونکہ اس سے جسمانی قوت میں کمی واقعی ہوجاتی ہے۔ممتاز عالم دین شبیر احمد قادری کا اس حدیث کے

حوالہ سے کہنا ہے کہ جس حدیث میں نہار منہ پانی پینے سے جسمانی طاقت کم ہونے کا ذکر کیا گیا ہے، اس حدیث کی اپنی حیثیت بھی محدثین کے ہاں محلِ نظر ہے۔یہ حدیث طبرانیؒ نے بیان کی ہے کہ حضرت ابو سعید خدری رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ حضور نبی کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا’’ جس نے نہار منہ پانی پیا اس کی طاقت کم ہو گئی‘‘اس روایت کی سند میں زید بن اسلمؓ اور ان کا بیٹا عبد الرحمنؓ دونوں ہی بہت کمزور راوی بیان کئے جاتے ہیں۔ جن کی طرف، امام طبرانی ؒ نے روایت کے بعد خود بھی اشارہ کیا ہے۔ اگر حدیث پر اعتماد کر بھی لیا جائے تو اس میں نہار منہ پانی پینے کی ممانعت کا حکم نہیں ہے، ایک تبصرہ ہے۔ نہار منہ پانی پینے والا گنہگار نہیں ہوتا ۔