بہترین زندگی کے راز, نفسیاتی مسائل کا حل , اپنی صحت بہتربنائیں, اسلام اورہم, ترقی کےراز, عملی زندگی کےمسائل اورحل, تاریخ سےسیکھیئے, سماجی وخاندانی مسائل, ازدواجی زندگی بہتربنائیں , گھریلومسائل, روزمرہ زندگی کےمسائل, گھریلوٹوٹکے اسلامی واقعات, کریئر, کونساپیشہ منتخب کریں, نوجوانوں کے مسائل , بچوں کی اچھی تربیت, بچوں کے مسائل , معلومات میں اضافہ , ہمارا پاکستان, سیاسی سمجھ بوجھ, کالم , طنز و مزاح, دلچسپ سائینسی معلومات, کاروبار کیسے کریں ملازمت میں ترقی کریں, غذا سے علاج, زندگی کےمسائل کا حل قرآن سے, بہترین اردو ادب, سیاحت و تفریح, ستاروں کی چال , خواتین کے لیے , مرد حضرات کے لیے, بچوں کی کہانیاں, آپ بیتی , فلمی دنیا, کھیل ہی کھیل , ہمارا معاشرہ اور اس کی اصلاح, سماجی معلومات, حیرت انگیز , مزاحیہ

کیا واقعی مسلمان عورتیں کسی ملکہ سے کم نہیں ہیں ؟

  پیر‬‮ 2 جولائی‬‮ 2018  |  18:28

یورپ میں فیملی کا کوئی تصور نہیں ہے، یوں کہہ لیں کے بہن، بھائی، ماں، باپ اور دادا، دادی کی کوئی تمیز نہیں ہے، جنسی ضرورت کے لئے شادی کی ضرورت محسوس نہیں کی جاتی،وہاں عورت کی کوئی عزت نہیں ہے، کوئی شوہر نہیں ہے جو کہے بیگم تم گھر رہو میں تمہیں ہر چیز  گھر لا کے دونگا، وہاں کوئی بیٹا نہیں ہے جو کہے ماں تم گھر سے نہ نکلو میں ہوں نا؟ وہاں کوئی بیٹی نہیں ہے جو کہے ماں تم تھک گئی ہو آرام کرو میں کام کر دونگی ۔وہاں عورت گھر کے کام خود کرتی

ہمیں سکھاتا ہے کہ۔۔۔۔۔غصہ اسلام میں حرام ہے ۔۔۔۔اور ایک مسلمان کو اپنے غصےپر قابو رکھنا چاہیے کیونکہ۔۔۔۔۔میرے نبیؐ نے فرمایا ۔۔۔۔۔۔"طاقتور وہ شخص نہیں ہے جو کشتی میں دوسروں کو پچھاڑ دیتا ہے بلکہ طاقتور تو در حقیقت وہ ہے جو غصے کے موقعے پر اپنے اوپر قابو رکھتا ہے ۔۔۔۔۔یعنی کہ غصے میں آکر کوئی ایسی حرکت نہیں کرتا جو اللہ اور رسول کو ناپسند ہے غصہ اور اپنی زبان پر قابو پانے والا شخص اچھا مسلمان کہلاتاہے۔۔۔۔میرے نبی نےولی فرمایا کہ ۔۔۔۔۔جو (خلاف حق بولنے سے)اپنی زبان کی حفاظت کرے گا ۔۔۔۔۔اللہ اسکے عیب پر پردہ ڈالے گا ۔۔۔۔اس لیئے اپنی زبان سے ہمیشہ اچھی بات ہی نکالیں اور ۔۔۔۔۔اللہ سخت ناراض ہوتا ہے اس بات سے بھی کہ کسی کی نقل اتاریں ۔۔۔۔اللہ سبحان وتعالی کو یہ پسند نہیں کہ اسکی بنائی ہوئی چیز یا انسان میں سے نقل نکالیں اسی لیئیے میرے نبی نے فرمایا کہ "میں کسی کی نقل اتارنا پسند نہیں کرتا چاہے اسکے بدلے مجھے بہت سی دولت ملے"۔۔۔۔۔اسلام ہمیں سکھاتاہے کہ ۔۔۔۔۔دوسرے جب مصیبت میں مبتلا ہوںتو آپ ان پر خوش نہ ہوں ۔۔۔۔۔بلکہ ان کے غم میں برابر کے شریک ہو کر انکا غم دور کرنے کی کوشش کریں کیونکہ میرے نبی نے فرمایا "تو اپنے بھائی کی مصیبت پر خوشی کا اظہار نہ کر ورنہ اللہ اس پر رحم فرمائے گا (اور مصیبت ہٹادےگا)اور تجھے مصیبت میں مبتلا کر دے گا ۔۔۔۔۔۔جن دو آدمیوں کے درمیان دشمنی ہوتی ہے ان میں سے کسی ایک پر اس دوران کوئی مصیبت آ پڑتی ہے تو دوسرا بہت خوشی مناتاہے ۔۔۔۔۔۔یہ اسلامی ذہنیت کے خلاف بات ہے مومن اپنے بھائی کی مصیبت پر خوشی نہیں مناتا اگرچہ دونوں کے درمیان رنجش ہو