ابنِ سینا

  بدھ‬‮ 11 اکتوبر‬‮ 2017  |  17:13

دشمنوں سے ہمیشہ بچو، اور دوست سےاس وقت جب وہ تمہاری تعریف کرنے لگے۔جس قوم کی تجربہ گاہیں دن رات روشن ہوں، اس ملک کا مستقبل کبھی تاریک نہیں ہوسکتا( ڈاکٹر سلیم الزماں صدیقی)۔ مجھ میں کوئی خصوصی ذہانت موجود نہیں، میں صرف غیر معمولی تجسس رکھتا ہوں( البرٹ آئن اسٹائن)۔ ننانوے فیصد ناکامیاں ان لوگوں کے حصے میں آتی ہیں جنہیں عذر پیش کرنے کی عادت ہوتی ہے( جارج واشنگٹن کارور) ۔کوئی فطین (جینئس) ایسا نہ ہوگا، جس میں تھوڑی بہت دیوانگی نہ ہو( ارسطو)۔ مجھے ڈر ہے کہ سائنس کو انسانیت کو خوش کرنے کے بجائے غاصب گروہوں کی طاقت بڑھانے میں استعمال کیا جائے گا( برٹرینڈرسل)جہاں غصّہ ہے سمجھ لو وہاں تباہی ضرور  ہو  گی  ۔سچی لگن  کو کانٹوں کی پروا نہیں ہوتی ۔ بدگمانی کشتی کے اندر قطرہ قطرہ رستا ہوا پانی ہے جو آخر کار کشتی کو

آخر کار کشتی کو لے ڈوبتا ہے ۔آنسو بہاؤ اور خوب بہاؤ یہ سوچ کر نہیں کہ ہماری خواہشات پوری نہیں ہوتیں بلکہ یہ سوچ کرکہ ھم اپنی خواہشات کے کس قدر غلام ہیں۔ آنکھ دل کا دروازہ ہے اس کی حفاظت کرو کہ تمام آفات اس راہ سے داخل ہوتیں ‌ہیں- ہر شئے کا حسن ہے اور نیکی کا حسن یہ ہے کہ فورا ً کی جائے۔ انسان کو دریا کی طرح سخی ، سورج کی طرح شفیق اور زمین کی طرح فراخ ہونا چاہے- نعمت کا نا مناسب استعمال خدا کی ناشکری ہے ۔