بہترین زندگی کے راز, اسپیشل نفسیاتی مسائل کا حل , اپنی صحت بہتربنائیں, اسلام اورہم, ترقی کےراز, عملی زندگی کےمسائل اورحل, تاریخ سےسیکھیئے, سماجی وخاندانی مسائل, ازدواجی زندگی بہتربنائیں , گھریلومسائل, روزمرہ زندگی کےمسائل, گھریلوٹوٹکے اسلامی واقعات, کریئر, کونساپیشہ منتخب کریں, نوجوانوں کے مسائل , بچوں کی اچھی تربیت, بچوں کے مسائل , معلومات میں اضافہ , ہمارا پاکستان, سیاسی سمجھ بوجھ, کالم , طنز و مزاح, دلچسپ سائینسی معلومات, کاروبار کیسے کریں ملازمت میں ترقی کریں, غذا سے علاج, زندگی کےمسائل کا حل قرآن سے, بہترین اردو ادب, سیاحت و تفریح, ستاروں کی چال , خواتین کے لیے , مرد حضرات کے لیے, بچوں کی کہانیاں, آپ بیتی , فلمی دنیا, کھیل ہی کھیل , ہمارا معاشرہ اور اس کی اصلاح, سماجی معلومات, حیرت انگیز , مزاحیہ


’’مہلک وباء دنیا میں اچانک نمودار ہو گی اور پھر کیسے ختم ہو گی ؟‘‘ 12 سال قبل ’’کورونا وائرس‘ ‘جیسی وبا کی پیش گوئی کردی گئی تھی 2008 میں لکھی گئی کتاب سامنے آگئی، تہلکہ خیز انکشافات

  ہفتہ‬‮ 18 جولائی‬‮ 2020  |  0:36

کورونا وائرس جیسی بیماری کا پیش گوئی 12سال قبل کر دی گئی تھی ۔ تفصیلات کے مطابق 2008ءشائع ہونیوالی ایک کتاب میں یہ پیش گوئی کی گئی تھی کہ نمونیا جیسی ایک بیماری جو پوری دنیا کو اپنی لپیٹ میں لے لی گی جو انسان کی سانس کی نالیوں اور پھیپھڑوں کو اٹیک کرکے متاثر کرے گی اور یہ ایسی بیماری ہو گی

جس پر کوئی دوا اثر نہیں کرے گی ۔ کتاب کا نام ’’ اینڈ آف ڈیز ‘‘ ہے جسے سلویہ برائون نے لکھا تھا ۔ کتاب میں مزید کہا گیا ہے کہ یہ مہلک

وبا ء اچانک دنیا میں رونما ہو گی اور پھر اچانک ہی چلی جائے گی ۔اور ایک دہائی بعد پھر اس دنیا پر حملہ آور ہو گی جس کے بعد یہ خود بخود ختم ہوجائیگی ۔کم کارڈیشن نے گزشتہ روز کتاب کا سکرین شارٹ سماجی رابطے کی ویب سائیٹ پر شیئر کیا اور کہا کہ مذکورہ کتاب کا اسکرین شارٹ ان کی بہن نے ایک چیٹنگ گروپ میں شیئر کیا تھا جہاں سے

انہوں اٹھا کر اپنے ٹویٹ پر مداحوں کیساتھ شیر کر دیا ہے ۔ ٹویٹر پیغام میں دیکھا جا سکتا ہے کہ اس پیغام کو کسی اور نے شیئر کیا تھا جسے بعد میںکم کارڈیشن نے اپنے ٹویٹر پیغام پر شیئر کیا ہے ۔ جبکہ ایک اور ٹویٹرصارف سلینا گوزمان نے پیغام میں ایک اور ٹویٹ پیغام میں کتاب کا نام ’’دی آئیز آف ڈارکنیس‘‘ اور متعلقہ پیج شیئر کیا 1983ء میں شائع ہونیوالی کتاب میں وبا ء کے بارے میں پڑھ جاسکتا ہے جسے چین کے شہر ووہان سے پھیلنے کا لکھا گیا ہے کہ جبکہ مذکورہ کتاب کے حوالے سے ابھی تک تصدیق نہیں کی جا سکی ہے ۔


انٹرنیٹ کی دنیا سے ‎‎

دن کی زیادہ پڑھی گئیں پوسٹس‎