بہترین زندگی کے راز, اسپیشل نفسیاتی مسائل کا حل , اپنی صحت بہتربنائیں, اسلام اورہم, ترقی کےراز, عملی زندگی کےمسائل اورحل, تاریخ سےسیکھیئے, سماجی وخاندانی مسائل, ازدواجی زندگی بہتربنائیں , گھریلومسائل, روزمرہ زندگی کےمسائل, گھریلوٹوٹکے اسلامی واقعات, کریئر, کونساپیشہ منتخب کریں, نوجوانوں کے مسائل , بچوں کی اچھی تربیت, بچوں کے مسائل , معلومات میں اضافہ , ہمارا پاکستان, سیاسی سمجھ بوجھ, کالم , طنز و مزاح, دلچسپ سائینسی معلومات, کاروبار کیسے کریں ملازمت میں ترقی کریں, غذا سے علاج, زندگی کےمسائل کا حل قرآن سے, بہترین اردو ادب, سیاحت و تفریح, ستاروں کی چال , خواتین کے لیے , مرد حضرات کے لیے, بچوں کی کہانیاں, آپ بیتی , فلمی دنیا, کھیل ہی کھیل , ہمارا معاشرہ اور اس کی اصلاح, سماجی معلومات, حیرت انگیز , مزاحیہ


اپناسب کچھ بیج کربیرون ملک اچھے روز گارکی خاطرجانےوالے کتنے ہزارپاکستانیو ں کونوکریوں سے فارغ کردیاگیا،اتنی بڑی تعداد میں پاکستانیوں کوکیوں نکالاگیا،جان کر عوام میں پریشانی کی لہردوڑ گئی

  جمعہ‬‮ 18 ستمبر‬‮ 2020  |  17:22

پاکستان میں ایوان بالا سینیٹ کو وزارت سمندر پار پاکستانیز نے تحریری جواب میں بتایا ہے کہ عالمی وبا کورونا وائرس کے باعث 41 ہزار 618 پاکستانی مزدوروں کو نوکری سے نکالا گیا جبکہ 25 ہزار 406 پاکستانی رخصت لے کر ملک واپس آ چکے ہیں۔ وزارت نے اپنے تحریری جواب میں کہا ہے کہ حکومت کی جانب سے بیرون ملک مقیم

پاکستانیوں کے لیے آن لائن پورٹل پر اب تک 67 ہزار 24 پاکستانی مزدوروں نے خود کو رجسٹرڈ کیا ہے۔ اور تمام متعلقہ اداروں سے ماہانہ بنیاد پر مزید ڈیٹا بھی اکٹھا کیا جا رہا

ہے۔ وزارت نے کہا کہ بیرون ملک مقیم پاکستانیوں کو برخاستگی اور بے روزگاری سے بچانے کے لیے وزات متعدد اقدامات اٹھا رہی ہے۔ وزارت کے جواب کے مطابق ’سمندر پار پاکستانی مزدوروں کو ملازمت سے برخاستگی سے بچانے اور واجبات کی ادائیگی اور مفت واپسی کے ٹکٹس کی سہولت فراہم کرنے کے لیے متعلقہ ممالک کے وزارت افرادی قوت اور سفارتی سطح پر بھی کوششیں کی جارہی ہیں۔ وزارت کے مطابق ’بیورو آف امیگریشن اینڈ اوورسیز ایمپلائیمنٹ واپس

آنے والے تارکین وطن کی بحالی کے جامع منصوبے پر کام کر رہی ہے جس میں اثرات کی جانچ پڑتال، ڈیٹا اکٹھا کرنا، تارکین وطن کو درپیش مسائل کا حل اور متعلقہ اداروں سے تبادلہ خیال کرنا شامل ہے۔ وزارت سمندر پار پاکستانیز نے سینیٹ میں اپنے تحریری جواب میں بتایا ہے کہ عالمی وبا کے باعث بے روزگار ہونے والے افراد کی مہارت میں اضافہ کرنے کے حوالے سے سہولیات فراہم کی جائیں گی تاکہ وہ ملک اور بیرون ملک ملازمت حاصل کر سکیں۔اس کے علاوہ سمال اینڈ میڈیم انٹر پرائزز ڈویلپمنٹ اتھارٹی اور نیشنل یوتھ ڈویلپمنٹ فریم ورک کے ذریعے بے روزگار ہونے والے تارکین کو اپنا کاروبار شروع کرنے میں سہولیات مہیا کی جائیں گی۔


انٹرنیٹ کی دنیا سے ‎‎

دن کی زیادہ پڑھی گئیں پوسٹس‎