بہترین زندگی کے راز, اسپیشل نفسیاتی مسائل کا حل , اپنی صحت بہتربنائیں, اسلام اورہم, ترقی کےراز, عملی زندگی کےمسائل اورحل, تاریخ سےسیکھیئے, سماجی وخاندانی مسائل, ازدواجی زندگی بہتربنائیں , گھریلومسائل, روزمرہ زندگی کےمسائل, گھریلوٹوٹکے اسلامی واقعات, کریئر, کونساپیشہ منتخب کریں, نوجوانوں کے مسائل , بچوں کی اچھی تربیت, بچوں کے مسائل , معلومات میں اضافہ , ہمارا پاکستان, سیاسی سمجھ بوجھ, کالم , طنز و مزاح, دلچسپ سائینسی معلومات, کاروبار کیسے کریں ملازمت میں ترقی کریں, غذا سے علاج, زندگی کےمسائل کا حل قرآن سے, بہترین اردو ادب, سیاحت و تفریح, ستاروں کی چال , خواتین کے لیے , مرد حضرات کے لیے, بچوں کی کہانیاں, آپ بیتی , فلمی دنیا, کھیل ہی کھیل , ہمارا معاشرہ اور اس کی اصلاح, سماجی معلومات, حیرت انگیز , مزاحیہ


سورۃ الواقعہ ، تنگدستی کا بہترین علاج

  ہفتہ‬‮ 17 اکتوبر‬‮ 2020  |  15:20

حضرت عثمان بن عفان ؓ ، حضرت ابن مسعودؓ کی عیادت کو تشریف لے گئے جو مرض الموت میں مبتلا تھے ۔ حضرت عثمانؓ اس وقت عالم اسلام کے خلیفہ تھے ۔ حضرت عثمانؓ نے حضرت ابن مسعودؓ سے پوچھا ، آپ کو کس بات کا شکوہ ہے ؟ حضرت ابن مسعودؓ : اپنے گناہوں کا ۔

حضرت عثمان بن عفان ؓ : کیا خواہش ہے ؟ حضرت ابن مسعودؓ : پرودگار کی رحمت کی ۔ حضرت عثمان بن عفان ؓ : کس چیز کا خوف ہے ؟ حضرت ابن مسعودؓ : عذاب الہٰی کا ۔ حضرت

عثمان بن عفان ؓ : آپ کیلئے طبیب بلا کر لاتے ہیں ؟ حضرت ابن مسعودؓ : طبیب ( اللّہ ) نے تو ہی مجھے بیمار کیا ہے ۔ پھر آپؓ نے اللّہ تعالیٰ کے اس ارشاد کی تلاوت فرمائی : ترجمعہ : ـ * اس زمین پر جو کچھ بھی ہے ، فنا ہوجانے والا ہے ۔ ( الرحمٰن : 26) * کہہ دیجئے کہ ہمیں کوئی مصیبت پیش نہیں آسکتی ، مگر جو اللّہ نے ہماری قسمت میں لکھ دی ہے ۔ ( التوبہ : 51 ) حضرت عثمان بن عفان ؓ : ہم آپ کو کچھ عطیہ دیں ۔ حضرت ابن مسعودؓ : جب ضرورت تھی اس وقت آپؓ نے نہیں دیا اور اس وقت دیں گے جب میں بےنیاز ہوں ۔ یعنی موت سامنے ہے ،

 اس وقت مال کی کوئی ضرورت نہیں ہے ۔ حضرت عثمان بن عفان ؓ : یہ عطیہ آپ کے بعد آپ کی لڑکیوں کے کام آئے گا ؟ حضرت ابن مسعودؓ : اس عطیے کی میری بیٹیوں کو کوئی ضرورت نہیں ۔ میں نے انہیں ان کے پرودگار کے حوالے کر دیا ہے ، وہی ان کی نگہداشت کرنے والا ہے اور میں نے انہیں ایک ایسا خزانہ دیا ہے ، جو کبھی ختم نہ ہوگا ۔ مراد اس سے ہر رات سورۂ واقعہ کی تلاوت ہے ، جو اس سورت کی تلاوت کا معمول بنائے گا ، رب تعالیٰ اس کی تمام مالی ضروریات کو پورا فرمائیں گے ۔ سورۂ واقعہ کی یہ فضیلت حضرت ابن مسعودؓ نے نبی کریم صلی اللّہ علیہ وسلم سے سن رکھی تھی ۔ چناچہ حضرت ابن مسعودؓ کہتے ہیں کہ

 میں نے رسول کریم صلی اللّہ علیہ وسلم کو یہ فرماتے سُنا کہ جو شخص ہر رات کو سورۂ واقعہ پڑھتا ہے ، اسے فاقہ ہرگز نہیں آئے گا ۔ حضرت

ابن عباسؓ فرماتے ہیں کہ رسول اکرم صلی اللّہ علیہ وسلم نے فرمایا جو شخص ہر رات کو سورۂ واقعہ پڑھتا ہے ، اسے کبھی فاقہ نہیں ہوگا ۔ * جو شخص فقروفاقہ سے عاجز ہو سورۂ واقعہ اکتالیس مرتبہ روزانہ پڑھے ، اس کی برکت سے ذلت و خواری اور تنگدستی جاتی رہے گی ۔ مال و دولت اور عزّت بڑھے گی ۔ جو ہمیشہ عشاء کی نماز کے بعد پڑھتا رہے گا کبھی محتاج نہیں ہوگا ، کبھی بھوکا نہیں رہے گا ، اللّہ تعالیٰ غیب سے روزی عطا کرے گا ۔


انٹرنیٹ کی دنیا سے ‎‎

دن کی زیادہ پڑھی گئیں پوسٹس‎