بہترین زندگی کے راز, اسپیشل نفسیاتی مسائل کا حل , اپنی صحت بہتربنائیں, اسلام اورہم, ترقی کےراز, عملی زندگی کےمسائل اورحل, تاریخ سےسیکھیئے, سماجی وخاندانی مسائل, ازدواجی زندگی بہتربنائیں , گھریلومسائل, روزمرہ زندگی کےمسائل, گھریلوٹوٹکے اسلامی واقعات, کریئر, کونساپیشہ منتخب کریں, نوجوانوں کے مسائل , بچوں کی اچھی تربیت, بچوں کے مسائل , معلومات میں اضافہ , ہمارا پاکستان, سیاسی سمجھ بوجھ, کالم , طنز و مزاح, دلچسپ سائینسی معلومات, کاروبار کیسے کریں ملازمت میں ترقی کریں, غذا سے علاج, زندگی کےمسائل کا حل قرآن سے, بہترین اردو ادب, سیاحت و تفریح, ستاروں کی چال , خواتین کے لیے , مرد حضرات کے لیے, بچوں کی کہانیاں, آپ بیتی , فلمی دنیا, کھیل ہی کھیل , ہمارا معاشرہ اور اس کی اصلاح, سماجی معلومات, حیرت انگیز , مزاحیہ


کورونا وائرس کی ایک ویکسین کی قیمت کتنے امریکی ڈالر ہو گی؟تفصیلات سامنے آگئیں

  منگل‬‮ 24 ‬‮نومبر‬‮ 2020  |  14:27

عالمی وبا قرار دیے جانے والے کورونا وائرس سے بچاؤ کے لیے تیارکی جانے والی ویکسینز اس وقت تجربات کے مختلف مراحل تیزی سے طے کررہی ہیں۔عالمی ذرائع ابلاغ کے مطابق دنیا کے مختلف ممالک میں 54 ویکسینز پر پر کام جاری ہے لیکن تاحال کسی بھی ویکسین کو حتمی قرار نہیں دیا گیا ہے البتہ 13 ویکسینز کے متعلق کہا گیا ہے کہ وہ تجربات کے

آخری مراحل طے کرچکی ہیں۔نجی ٹی وی ہم نیوز کے مطابق موجودہ صورتحال میں زیادہ تر ممالک کے لوگ یہ جاننے میں دلچسپی رکھتے ہیں کہ کورونا سے بچاؤ کی

ویکسین کب تک دستیاب ہو جائے گی؟ اور اس کی قیمت کیا ہوگی؟قیمت کے متعلق ایک برطانوی اخبار نے بتایا ہے کہ موسم گرما میں موڈرنا نے ویکسین کی ایک خوراک کی قیمت 37 امریکی ڈالرز بتائی تھی۔ مؤقر برطانوی اخبار کے مطابق جانسن اینڈ جانسن نے ویکسین کی ایک خوراک کی قیمت دس ڈالرز رکھی ہے۔امریکی کمپنی فائزر کے حوالے سے تاحال یہ اطلاعات ہیں کہ اس کی تیار کردہ ویکسین 20 امریکی ڈالرز میں دستیاب ہو گی جب کہ آکسفرڈ یونیورسٹی اور آیسٹرا زینیکا نے تیار کردہ ویکسین کی قیمت تقریباً چار ڈالر بتائی ہے۔عالمی ذرائع ابلاغ کے مطابق غالب امکان ہے کہ آئندہ ماہ کے وسط تک مختلف ویکسینوں کے استعمال کی اجازت مجاز اتھارٹیز کی جانب سے مل جائے گی۔یہاں یہ بات بھی قابل ذکر ہے

کہ کورونا سے بچاؤ کے لیے تیار کی جانے والی ویکسین صرف انسانی جسم میں قوت مدافعت پیدا کرے گی تاکہ کورونا کے پھیلاؤ کو روکا جا سکے لیکن وائرس سے جنم لینے والی بیماری کا علاج نہیں ہو گی۔عالمی ذرائع ابلاغ کے مطابق فائزر اور بائیو این ٹیک کی جانب سے تیار کی جانے والی ویکسین کو محفوظ رکھنے کے لیے منفی 70 ڈگری سینٹی گریڈ کا درجہ حرارت درکار ہو گا اور اسے چھ ماہ تک محفوط رکھا جا سکے گا جب کہ موڈرنا کی ویکسین منفی 20 ڈگری پر محفوظ رہ سکے گی۔دستیاب معلومات کے مطابق آکسفرڈ یونیورسٹی اور آیسٹرا زینیکا کی ویکسین کو عام فریج کے درجہ حرارت پر محفوظ رکھنا ممکن ہو گا۔عالمی ذرائع ابلاغ کے مطابق روس کی اسپوتنک فائیو ویکسین بھی فریج کے درجہ حرارت میں رکھی جا سکے گی۔


انٹرنیٹ کی دنیا سے ‎‎

دن کی زیادہ پڑھی گئیں پوسٹس‎